جنرل سلیمانی کے خون کا بدلہ ضرور لیں گے: سربراہ پاسداران انقلاب

تہران، ارنا- پاسداران اسلامی انقلاب کے کمانڈر نے شہید جنرل سلیمانی کے قتل کا بدلہ لینے پر زور دیتے ہوئے کہا کہ جنرل سلیمانی اور ابومہدی المہندس نے داعش کی شکست میں سب سے فیصلہ کن اور اہم کردار ادا کیا۔

ان خیالات کا اظہار جنرل "حسین سلامی" نے آج بروز اتوار کو ایران کے دورے پر آئے ہوئے عراقی وزیر دفاع "جمعہ عناد سعدون" سے ایک ملاقات کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

اس موقع پر انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ ہم یقینی طور پر جنرل سلیمانی اور ابومہدی المہندس کے قتل کا بدلہ لیں گے۔

انہوں نے مزید کہا کہ اس بدلے کا جنرل سلیمانی اور جنرل ابومہدی المہندس کے قتل کے قانونی رویے کے تعاقب سے کوئی تعلق نہیں اور یہ بالکل الگ اقدام ہے۔

جنرل سلامی نے مزید کہا کہ انہوں نے دنیائے اسلام میں داعش کی شکست سمیت علاقے میں امریکہ اور ناجائز صہیونی ریاست کی سازشون کو برباد کرنے میں سب سے فیصلہ کن اور اہم کردار ادا کیا ہے۔

انہوں نے عراق سے امریکی فوجیوں کے انخلا کی ضرورت پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ  عراق سے امریکی فوجیوں کی واپسی، عراقی پارلمنیٹ میں منظور شدہ بل کے مطابق ہونی چاہیے اور یہ عراقی عوام کا مطالبہ ہے۔

جنرل سلامی نے عراق کی قومی سالیمت اور خودمختاری کے تحفظ سمیت سرحدوں میں مشترکہ تعاون کو ایران کی بنیادی پالیسی قرار دیتے ہوئے کہا کہ ہماری خواہش یہ ہے کہ عراق بڑی طاقتوں سے آزاد اور ایک متحد ملک رہے۔

دراین اثنا عراقی وزیر دفاع نے داعش کیخلاف مقابلہ کرنے کیلئے ایران کے تعاون کا شکریہ ادا کرتے ہوئے سرحدوں میں باہمی تعاون کے فروغ پر زور دیا۔

انہوں نے دونوں ملکوں کے درمیان تمام شعبوں میں تعلقات میں مزید تعاون پر زور دیا۔

واضح رہے کہ عراقی وزیر دفاع ایک اعلی وفد کی قیادت میں ہفتے کے روز دورہ ایران پہنچ گئے جہاں انہوں نے اپنے ایرانی ہم منصب بریگیڈیئر "امیر حاتمی"، مسلح افواج کے سربراہ میجر جنرل "محمد باقری" اور اعلی ایرانی قومی سلامتی کونسل کے سیکرٹری ایڈمیرل "علی شمخانی" سے الگ الگ ملاقاتیں کیں۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
9 + 9 =