امریکی زیادہ سے زیادہ دباو کی پالیسی کا خاتمہ قریب ہے: روحانی

تہران، ارنا- اسلامی جمہوریہ ایران کے صدر مملکت نے کہا ہے کہ آج کی دنیا میں امریکہ سے لے کر یورپ تک ساری علامتیں اس بات کی نشاندہی کررہی ہیں کہ زیادہ سے زیادہ دباؤ ڈالنے سے کچھ حاصل نہیں ہوگا اور وہ ختم ہونے والا ہے۔

ان خیالات کا اظہار ڈاکٹر "حسن روحانی" نے آج بروز جمعرات کو صحت اور تعلیم کے شعبوں میں ملک کے مختلف صوبوں میں متعدد منصوبوں کی افتتاحی تقریب کےموقع پر گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے کہا کہ قومی یکجہتی سے ہم کرونا وائرس کے بحران پر قابوپالیں گے اور ساتھ ہی قائد اسلامی انقلاب کی رہنمایی اور قومی اتحاد سے امریکی پابندیوں پر بھی غلبہ پالیں گے۔

صدر روحانی نے کہا کہ ایرانی قوم اپنی مزاحمت اور کوششوں کے نتیجے کو دیکھ لیں گی۔

ایرانی صدر نے ملک میں مختلف ترقیاتی منصوبوں کے نفاذ پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ روزانہ تقریبا 5۔8 ارب تومان (ایرانی قومی کرنسی) اسکولوں کی تعمیر اور ان کی بحالی کیلئے سرمایہ کاری کی گئی ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ ملک میں روزانہ 27 کلاسیں بنائی گئی ہیں؛ 83 کلاسیں ہیٹنگ کے نئے سسٹم سے لیس ہوگئی ہیں اور 10 کلاسیں حفاظتی سسٹم سے لیس ہوگئی ہیں۔

صدر روحانی نے ملک میں میڈیکل سائنس کی پیشرفت کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ ہم اس حوالے سے دنیا کی ترقی یافتہ ملکوں میں شامل ہیں۔

انہوں نے کہا کہ دنیا کے مختلف ترقی یافتہ ملکوں کے عوام سرجری کیلئے ایران کا رخ کرتے ہیں اور یہ صرف طبی خدمات کے سستے ہونے کی وجہ نہیں بلکہ وہ ایران میں میڈیکل سائنس پر بھروسہ کرتے ہیں جو فخر کی بات ہے۔

ایرانی صدر نے کرونا وائرس کیخلاف جد و جہد کرنے والی طبی ٹیموں کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ ان کی انتھک کوششوں کی وجہ سے ہم اس وبا پر قابو پانے کے قابل ہوں گے جو انتہایی قابل قدر ہے۔

صدر روحانی نے مزید کہا کہ  گزشتہ 9 مہینوں کے دوران طبی ٹیموں نے بہت بڑے کام کیے ہیں اور وہ اب بھی بڑی بہادری سے میدان عمل میں سرگرم ہیں؛ ہم ان سب کی صحت کے تحفط کی دعا کرتے ہیں۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
3 + 5 =