سرحدوں کی سلامتی کے تحفظ کیلئے پاکستانی کوششیں اطمینان بخش ہیں: ظریف

اسلام آباد، ارنا- پاکستان کے دورے پر آئے ہوئے ایرانی وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ اسلام آباد اور پاکستانی آرمی کیجانب سے مشترکہ سرحدوں کی سلامتی کے تحفظ کیلئے اٹھائے گئے اقدامات اطمنیان بخش ہیں۔

ان خیالات کا اظہار "محمد جواد ظریف" نے اپنے پاکستانی ہم منصب کیساتھ ملاقات کے بعد ارنا نمائندے کیساتھ گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے مشترکہ سرحدوں کی حفاظت اور اس حوالے سے دونوں ملکوں کے درمیان تعاون پر پاکستانی حکومت اور فوج کی کارکردگی کو سراہا۔

 ظریف نے سرحدوں کی سلامتی کی مینجمنٹ سے متعلق پاکستانی حکومت اور فوج کیجانب سے ایران سے تعاون پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ مجھے یقیین ہے کہ دونوں ممالک اس حوالے سے مزید موثر اقدامات اٹھا سکتے ہیں۔

ایرانی وزیر خارجہ نے اس عزم کا اعادہ کیا کہ ان کا ملک مشترکہ سرحدوں پر پاکستان کیجانب سے باڑ لگانے اور ساتھ ہی چیگ پوسٹ لگانے کا خیر مقدم کرتا ہے۔

 ظریف نے مزید کہا کہ انہوں نے پاکستانی آرمی چیف اور وزیر خارجہ کیساتھ اپنی ملاقاتوں میں نئے سرحدی بازاروں سمیت نئے سرحدی گیٹ کھولنے پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ ایران اور پاکستان کے درمیان ریمدان- گبد سرحدی گیٹ کا آئندہ ہفتے کے دوران نفاذ کیا جائے گا۔

 ظریف نے مزید کہا کہ انہوں نے اپنے پاکستانی ہم منصب کیساتھ سرحدی تعاون، مہاجرت اور دہشتگردی کی روک تھام کے موضوعات پر بات چیت کی ہے اور دونوں فریقین نے تعلقات کے فروغ سے اتفاق کیا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ دونوں فریقین نے باہمی اورعلاقائی تعاون، خلیج فارس کی صورتحال، جوہری معاہدے اور بعض ممالک کیجانب سے ناجائز صہیونی ریاست سے تعلقات استوار کرنے کے موضوعات پر تبادلہ خیال کیا ہے۔

اس کے علاوہ پاکستانی وزیر خارجہ نے ارنا نمائندے کیساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران اور پاکستان، افغانستان کی صورتحال میں بہتری آنے میں کردار ادا کرنے پر، پُرعزم ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ تہران اور اسلام آباد، افغان امن عمل سے متعلق مشترکہ مواقف رکھتے ہیں اور اس حوالے سے اپنے مقاصد کے حصول تک باہمی تعاون میں مزید اضافہ کریں گے۔

قریشی نے کہا کہ ایران اور افغانستان کے خصوصی نمائندے برائے افغانستان کے امور نے بھی اسلام آباد میں منعقدہ ایک اجلاس کے دوران افغان مسئلے پر مزید تعاون سے اتفاق کیا ہے۔

انہوں نے اسلامی جمہوریہ ایران اور پاکستان کے درمیان تاریخی اور برادرانہ تعلقات کا ذکر کرتے ہوئے ظریف کے حالیہ دورہ پاکستان پر خوشی کا اظہار کرلیا۔

قریشی نے ایرانی حکام کیجانب سے اسلام آباد کے علاقائی مواقف بشمول مسئلے کشمیر پر پاکستانی مواقف کی حمایت کا شکریہ ادا کیا۔

اس کے علاوہ، اسلام آباد میں قائم ایرانی سفارتخانے نے پاک ایران وزرائے خارجہ کے حالیہ اجلاس سے متعلق کہا ہے کہ ظریف نے اس ملاقات میں دونوں ملکوں کے درمیان گہرے تاریخی اور ثقافتی تعلقات کا ذکر کیا۔

انہوں نے تمام شعبوں میں پاکستان سے تعلقات کے فروع پر تیاری کا اظہار کرتے ہوئے پاکستان سے سرحدی گیٹوں میں اضافہ کرنے اور تجارتی تعلقات کے فروغ کیلئے نئے سرحدی بازار کھولنے پر آمادگی کا اظہار کرلیا۔

انہوں نے سرحدوں کی سلامتی کی تقویت کیلئے باہمی مشاورت کا سلسلہ جاری رکھنے پر زور دیا۔

اس کے علاوہ دونوں فریقنی نے علاقائی تبدیلیوں، دنیائے اسلام کے مسائل، علاقائی تعاون بالخصوص ایکو اقتصادی تعاون تنظیم کی تقویت، دہشتگردی کی مشترکہ روک تھام، غیر قانونی مہاجرت کی روک تھام اور زیارتی سفروں میں آسانی لانے جیسے موضوعات پر تبادلہ خیال کیا۔

دونوں ملکوں کے وزرائے خارجہ مستقبل قریب میں مشترکہ اقتصادی کمیشن کے قیام سے اتفاق کیا۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
7 + 9 =