جوہری معاہدے سے امریکی علیحدگی سے عالمی امن اور سلامتی کو نقصان پہنچا ہے

تہران، ارنا – ایرانی قومی سلامتی کے سابق عہدیدار نے کہا ہے کہ جوہری معاہدے سے ٹرمپ کی علیحدگی سے عالمی امن وسلامتی کو ایک بڑا دھچکا لگا ہے۔

یہ بات حسن موسویان نے آج بروز پیر سابق امریکی سیکیورٹی عہدیدار 'کرستن فونتن روز' کے ساتھ ایک مباحثے بحث میں کہی۔
انہوں نے کہا کہ جوہری معاہدے سے ٹرمپ کے جانے سے عالمی امن و سلامتی کو ایک بڑا دھچکا لگا ہے۔

امریکی سابق عہدیدار نے اس سوال، کہ کیا جوہری معاہدے سے ٹرمپ کی علیحدگی اور جنرل سلیمانی کے قتل سے امریکہ محفوظ ہو گیا ہے، کے جواب میں کہا کہ امریکہ کو دو وجوہات کی بناء پر زیادہ سیکیورٹی حاصل ہے ایک خطے میں امریکیوں کی سلامتی کو فراہم کرنا کیونکہ ایران سے منسلک گروپ کمزور ہوچکے ہیں اور ایک اور وجہ ایران کی میزائل طاقت میں کمی ہے۔ کیونکہ  در حقیقت ایران کی مالی صلاحیت کم ہوگئی ہے۔

موسویان نے بھی مذکورہ سوال کے جواب میں کہا کہ مجھے یقین ہے کہ امریکہ کی سیکیورٹی کم ہوئی ہے۔ جوہری ہتھیاروں کا عدم پھیلاؤ عالمی سیکورٹی کا لازمی جزو ہے۔ ایرانی جوہری معاہدہ ایٹمی عدم پھیلاؤ کی تاریخ کی یہ سب سے جامع اور مکمل دستاویز ہے ٹرمپ نے اس معاہدے سے علحدگی سے عالمی امن و سلامتی کو ایک بڑا دھچکا لگا ہے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
7 + 9 =