ایرانی اسلحے کی پابندی 18 اکتوبر کو ختم ہوگی

تہران، ارنا – ایرانی وزارت خارجہ کے ترجمان نے 18 اکتوبر کو ایرانی اسلحے کی پابندی کے خاتمے کا حوالہ دیتے ہوئے کہا ہے کہ 18 اکتوبر امریکی شکست کا دن ہے جو جبر اور غنڈہ گردی کے باوجود ناکام ہوا۔

یہ بات سعید خطیب زادہ نے آج بروز پیر اپنی ہفتہ وار پریس کانفرنس میں صحافیوں کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئےکہی۔
انہوں نے18 اکتوبر کو ایرانی ہتھیاروں کی برآمدات اور درآمدات کے لئے لائسنسنگ سسٹم کے خاتمے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ 18 اکتوبر امریکی شکست کا دن ہے جو اپنی غنڈگردی کے باوجود کچھ نہیں کر سکا۔
انہوں نے ایرانی وزیر خارجہ محمد جواد ظریف اور اپنے برطانوی ہم منصب کے درمیان ٹیلی فونک رابطے اور ایران پر برطانیہ کے قرضے کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ برطانیہ کا ایران پر قرض ہے اور اس قرض کی ادائیگی میں تاخیر کی وجہ سے ہر دن اس میں اضافہ ہوتا جارہا ہے۔ یہ تاخیر بھی قابل قبول نہیں ہیں۔

خطیب زادہ نے نازنین زاغری کے معاملے کے بارے میں کہا کہ ایران کی عدلیہ آزاد ہے اور وہ بھی عدالتی فیصلے کے مطابق جیل میں اپنی سزا بھگت رہی ہے۔

انہوں نے تہران اور بیجنگ کی اسٹریٹجک دستاویز میں چین کو تیل فروخت کرنے کا حوالہ دیتے ہوئے سے کہا کہ 25 سالہ دستاویز موجودہ امور کے بارے میں نہیں بلکہ ایک روڈ میپ ہے۔ اگر امریکہ زیادہ سے زیادہ دباؤ کی پالیسی کے باوجود اپنا مقصد حاصل نہیں کرسکا ہے ایران اور بہت سے ممالک کے درمیان باہمی تعاون کی وجہ سے ہے۔

انہوں نے کہا کہ امریکہ خواب میں اس کو نہیں دیکھتا تھا کہ تیل کی فروخت سے متعلق ایران کے خلاف کوششیں کامیاب نہیں ہوئیں۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
4 + 1 =