ایرانی مندوب کا ملک سے متعلق عالمی جوہری ادارے کے سربراہ کے بیانات پر رد عمل

تہران، ارنا- عالمی جوہری ادارے میں تعینات ایران کے مستقل مندوب نے آئی اے ای اے کے سربراہ کے حالیہ بیانات کے رد عمل میں کہا ہے کہ عالمی جوہری ادارے کے قانونی دستاویزات میں "فرار" اور "جوہری مواد کا نمایان معیار" جیسے الفاظ کا کوئی جگہ نہیں ہے۔

ان خیالات کا اظہار "کاظم غریب آبادی" نے اتوار کے روز ایک ٹوئٹر پیغام میں کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ عالمی جوہری ادارے کی نگرانی کے تحت یورینیم کی افزودگی کرنے والے ممالک کیلئے "فرار" اور"جوہری مواد کا نمایاں معیار" جیسے خود ساختہ معیار کو قائم کرنا بجا طور پر نہیں ہے اور ان کی عالمی جوہری ادارے کے قانونی دستاویزات میں کوئی جگہ نہیں ہے۔

 غریب آبادی کا کہنا ہے کہ دنیا میں 1،300 ٹن سے زیادہ اعلی افزودہ یورینیم اور 300 ٹن پلوٹونیم موجود ہیں  اور عالمی ایٹمی ایجنسی کی سیف گارڈز کی رپورٹ کے مطابق 2019 میں دنیا بھر میں "جوہری مواد کا نمایاں معیار" 21،6448 تھا؛ تو اگر ایسا ہے ہم ایک بہت خطرناک دنیا میں رہتے ہیں۔

ایرانی سفیر نے مزید کہا کہ کیا سیکرٹری جنرل گروسی یہ بتاسکتے ہیں کہ ہتھیاروں سے لیس پانچ ممالک کے علاوہ نیدرلینڈز، جرمنی، جاپان، برازیل اور ارجنٹائن جیسے ممالک کے لئے "جوہری مواد کا قابل ذکر معیار" کیا ہے؟ کیا جوہری اقدامات کا اس طرح جائزہ نہ لینا بہتر نہیں ہے؟

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
4 + 0 =