شجریان ایرانی روایتی موسیقی کا ابدی ورثہ تھا: یونیسکو

تہران۔ ارنا - اقوام متحدہ کی تعلیمی ، سائنسی اور ثقافتی تنظیم کے ڈائریکٹر جنرل نے نامور اور ممتاز ایرانی گلوکار "محمد رضا شجریان" کی وفات کے موقع پر ایک پیغام میں کہا ہے کہ وہ ایرانی روایتی موسیقی کا ابدی ورثہ تھا۔

یہ بات اودری آزولای نے ٹوئیٹر میں ایک پیغام لکھی۔

انہوں نے شجریان کو ایرانی روایتی موسیقی کی ابدی میراث قرار دیتے ہوئے کہا کہ یونیسیکو نے ان کی بے مثال تخلیقی صلاحیتوں اور فن کی آزادی کے لیے ان کا پختہ عزم کیلیے پکاسو اور موزارٹ کا ایوارڈ دیا تھا۔ 

اس ٹویٹ کے بعد فرانسیسی کے سابق وزیر ثقافت نے شجریان کے 'شب وصل' گانے کے سننے کے لئے قارئین کو مدعو کیا۔

ایرانی صدر مملکت نے نامور گلوکار "محمد رضا شجریان" کے انتقال پر تعزيت کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ مشہور ایرانی گلوکار اور فنکار محمد رضا شجریان کا انتقال ہمارے لئے بہت درد اور رنج کا باعث بنایا گیا۔

واضح رہے کہ تہران میں اقوام متحدہ کے نمائندے ، ایران میں سوئٹزرلینڈ ، کروشیا، یوکرائن اور برطانیہ کے سفارت خانوں کے علاوہ ایرانی محکمہ خارجہ کے سابق ترجمان اور آذربائیجان میں تعینات سفیر سید عباس موسوی، فرانس میں ایرانی سفیر بہرام قاسمی اور عراقی علاقے کردستان کے سربراہ نیچروان بارزانی نے بھی محمد رضا شجریان کی موت پر افسوس کا اظہار کیا۔
ممتاز ایرانی گلوکار ستمبر 1940 کو شہر مشہد مقدس میں پیدا ہوئے، اسے فارسی روایتی موسیقی کا بہترین استاد سمجھا جاتا تھا۔
نامور اور ممتاز ایرانی گلوکار "محمد رضا شجریان" کو طویل عرصہ تک بیماری کو برداشت کرنے کے بعد ایرانی جم ہسپتال میں انتقال کیا گیا۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

متعلقہ خبریں

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
9 + 3 =