ایران کا آذربائیجان اور آرمینیا کے درمیان فائربندی کا خیر مقدم

 تہران، ارنا – ایرانی وزیر خارجہ نے  ناگورنو کاراباخ میں آذربائیجان اور آرمینیا کے درمیان تنازعے کے خاتمے کا خیر مقدم کرتے ہوئے کہا کہ یہ اقدام "امن کی طرف ایک قدم" کا مترادف ہے۔

یہ بات محمد جواد ظریف نے ٹوئیٹر میں اپنے ذاتی اکاونٹ پر لکھی۔

انہوں نے کہا کہ ہم ناگورنو کاراباخ میں تنازعات کے خاتمے، جو امن کی طرف ایک قدم ہے، کا خیرمقدم کرتے ہیں۔

ایرانی وزیر خارجہ نے کہا کہ ہم اپنے ہمسایہ ممالک 'آرمینیا اور آذربائیجان' سے بین الاقوامی قانون اور علاقائی سالمیت کے احترام پر مبنی اصولی مذاکرات میں حصہ لینے کی اپیل کرتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ "ہم روس کی تعمیری کوششوں کو سراہتے ہیں۔"

ظریف نے ناگورنو کاراباخ میں جنگ بندی کی مدد کے لئے روس کی کوششوں کی بھی تعریف کی۔

روسی ذرائع ابلاغ نے کچھ منٹ پہلے ناگورنو کاراباخ میں تنازعے پر جنگ بندی کا اعلان کیا۔

ترکی کی وزارت خارجہ نے بھی ایک اہم ابتدائی اقدام کی حیثیت سے ناگورنو - کاراباخ جنگ بندی کی حمایت کرتے ہوئے کہا کہ لیکن یہ مستقل حل کا متبادل نہیں بن سکتا۔

آرمینیائی اور آذربائیجانی وزرائے خارجہ نے جمعہ کے روز ماسکو میں روسی وزیر خارجہ 'لاوروف' کی میزبانی میں 10 گھنٹوں کی بات چیت کے بعد ناگورنو کاراباخ خطے میں ایک مشترکہ دستاویز اور جنگ بندی پر اتفاق کیا۔ یہ معاہدہ ہفتہ کے روز  10 اکتوبر کو 12 بجے سے کاراباخ میں نافذ العمل ہوگا۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
6 + 9 =