ایران کی کیمیائی ہتھیاروں کے عدم پھیلاؤ سے شام کیخلاف غلط استعمال کی تنقید

نیویارک، ارنا - اقوام متحدہ میں ایران کے مستقل نمائندے نے کیمیائی ہتھیاروں کے عدم پھیلاؤ سے متوازن، مکمل اور غیر امتیازی سلوک پر عمل درآمد کا مطالبہ کرتے ہوئے شام کیخلاف کیمیائی ہتھیاروں کے عدم پھیلاؤ سے غلط استعمال کی تنقید کی۔

یہ بات مجید تخت روانچی نے پیر کے روز شام میں کیمیائی ہتھیاروں کے استعمال سے متعلق پیر کو اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے اجلاس میں خطاب کرتے ہوئے کہی۔

انہوں نے کہا کہ حالیہ برسوں میں بے بنیاد الزامات لگا کر شامی حکومت کے خلاف اس عمل کا غلط استعمال کیا گیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ایران معاصر تاریخ میں کیمیائی ہتھیاروں کا سب سے بڑا شکار ملک کی حیثیت سے کسی بھی جگہ اور کسی بھی حالت میں ان ہتھیاروں کے استعمال کی شدید مذمت کرتا ہے۔

تخت روانچی نے کہا کہ ایران بھی کیمیائی ہتھیاروں کے کنونشن کے متوازن ، مکمل اور غیر امتیازی سلوک پر عمل درآمد کے لئے اپنی درخواست کو دہراتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ حالیہ برسوں میں بے بنیاد الزامات کی مبنی پر تنظیم برائے ممانعت کیمیائی ہتھیار  اور  سلامتی کونسل کے رویے سے  شامی حکومت کیخلاف غلط فائدہ اٹھایا گیا ہے۔

تخت روانچی نے شام کے کیمیائی ہتھیاروں کی تباہی کے لئے مشترکہ میکانزم کی منظور شدہ رپورٹ جس کی بنیاد پر دمشق کی طرف سے تمام وعدوں کی تعمیل اور تمام کیمیائی وسائل کی تباہی ہے، کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ کیمیائی ہتھیاروں کے پھیلاؤ کی تنظیم (او پی سی ڈبلیو) نے بھی شام کے تمام کیمیائی ذخائر اور 27 پیداواری مراکز کی تباہی کی تصدیق کی ہے۔

انہوں نے کہا کہ فی الحال ان حقائق اور کیمیکل ہتھیاروں کے پھیلاؤ کی تنظیم اور اقوام متحدہ کے ساتھ شامی حکومت کا تعاون ، بشمول 80 سے زائد ماہانہ رپورٹس پیش کرنے کو نظر انداز کیا جا رہا ہے۔

ایرانی مندوب نے اس طرز عمل کو "غیر تعمیری" پالیسیاں قرار دیتے ہوئے کہا کہ یہ پالیسیاں سلامتی کونسل اور کیمیکل ہتھیاروں کے پھیلاؤ کے لئے تنظیم کی پیشہ ورانہ ساکھ کی تباہی کے ساتھ ساتھ اس تنظیم کے فیصلہ سازی عمل کو نقصان پہنچانے کے باعث ہیں۔

انہوں نے کہا ہمیں اس صورتحال کو روکنے کے لئےاس کونسل اور کیمیکل ہتھیاروں کی ممانعت کی تنظیم کے موجودہ  رویے جو کچھ ممالک کے سیاسی اہداف کی بنیاد پر آغاز کیا گیا ہے، کو روکنا ہوگا۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
6 + 3 =