ایران نے آذربائیجان اور آرمینیا کے مابین تنازعہ کے خاتمے کے لئے ایک منصوبہ تیار کیا ہے

تہران، ارنا – ایرانی وزارت خارجہ کے ترجمان نے علاقے ناگورنو کاراباخ  تنازعہ کے حل کے لئے ہمارے ملک کی تیاری کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ ایران نے اس جنگ کو جلد از جلد ختم کرنے کے لئے جمہوریہ آذربائیجان کی علاقائی سالمیت کے تحفظ ، فوجی فورسز کے انخلا اور فوجیوں کی واپسی اور مذاکرات کے آغاز پر مبنی ایک منصوبہ تیار کیا ہے۔

بہ بات سعید خطیب زادہ نے پیر کے روز اپنی ہفتہ وار پریس کانفرنس میں صحافیوں کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہی۔

انہوں نے کاراباخ علاقے میں تنازعے کے خاتمے کیلیے ایران کی تیاری کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ ہمیں امید ہے کہ فریقین جنگ کے تسلسل سے گریز کر کے شہریوں پر حملہ نہ کرنے کے بنیادی حقوق پرعمل کریں گے۔

وزارت خارجہ کے ترجمان نے کہا کہ ایران اپنی سرحدوں پر تنازعات کو برداشت نہیں کرسکتا ہے ہم نے غور سے دونوں دوست ممالک کو بتایا کہ وہ ضروری دیکھ بھال کریں۔

ریاض کی خفیہ جوہری سرگرمیوں کے بارے میں ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ سعودی عرب اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے فریم ورک کے اندر اپنی ذمہ داریوں کو پورا کرنے کا پابند ہے اور ہم نے بین الاقوامی اداروں کو بھی کہا ہے کہ وہ سعودی عرب کو اپنی سرگرمیوں کا جوابدہ بنائے۔

خطیب زادہ نے کہا کہ  اس سال پچھلے سالوں کے برعکس کورونا کی بیماری کی وجہ سے اربعین مارچ کا انعقاد نہیں کیا جائے گا۔

وزارت خارجہ کے ترجمان نے مزید بتایا کہ ایران اور ترکی کے درمیان سیاحتی دوروں کے لئے پروازیں کورونا وائرس کے پھیلنے کی وجہ سے نہیں چلائی جائیں گی۔

انہوں نے جنوبی کوریا میں منجمد ہونےوالی ایرانی کرنسیوں کی بحالی کیلیے دونوں ممالک کے درمیان مشاورت کے بارے میں کہا کہ کوریا کے ساتھ مشاورت جاری ہے لیکن یہ ہماری مرضی کے مطابق تیزی سے آگے نہیں بڑھ رہی ہے اور خاص طور پر دوائیوں کی خریداری اور کچھ اشیاء کے حوالے سے طے پانے والے معاہدوں پر عملدرآمد سست روی کا شکار ہے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
7 + 3 =