ایران کے بجلی نیٹ ورک کو یورپ سے منسلک کرنے پر تیار ہیں: وزیر توانائی

تہران، ارنا- ایرانی وزیر توانائی نے کہا ہے کہ تیل،گیس اور بجلی کے شعبے میں ایران کی توانائی کا بنیادی ڈھانچہ بحیرہ کیسپین سے کھلے پانیوں میں توانائی کی منتقلی کے لئے ایک اچھا پلیٹ فارم ثابت ہوسکتا ہے۔

ان خیالات کا اظہار "رضا اردکانیان" نے آج بروز جمعرات کو برلن میں منعقدہ یورپ- بحیرہ کیسپین کے آن لائن اجلاس کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

منعقدہ اس اجلاس میں بحیرہ کیسپین کے ممالک کے درمیان تونائی کے شعبے میں تعاون کے طریقوں کا جائزہ لیا گیا۔

انہوں نے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران ، توانائی کے بے پناہ وسائل اور توانائی کے میدان میں خصوصی افرادی قوت اور بھاری سہولیات کے باوجود، شمال میں بحیرہ کیسپین اور جنوب میں خلیج فارس کے مابین بہترین راہداری کی حیثیت رکھتا ہے اور 15 ملکوں سے ایران کی مشترکہ آبی اور زمینی سرحدوں کی وجہ سے یہ بحیرہ کیسپین کے ممالک کے سامان کی نقل و حمل اور بین الاقوامی ٹرانسپورٹ راہداریوں کیساتھ ساتھ انرجی کوریڈورز خصوصا بجلی کے ٹرانسمیشن راہداری کیلئے موزون راستہ ہوسکتا ہے۔

اردکیانیان نے کہا کہ یورپی یونین کے ممالک ای سی او جیسے باہمی یا کثیرالجہتی میکنزم کے فریم ورک میں ہمارے علاقائی تعاون میں شامل ہوسکتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ خطے کے ممالک جن کے پاس دنیا میں تیل اور گیس کے ثابت شدہ وسائل ہیں، تعلقات کو مستحکم کرنے اور ان وسیع وسائل کی پیداوار اور برآمد کی پالیسیاں ریگولیٹ کرنے سمیت ممکنہ طور پر ان وسائل کی قیمت کا تعین کرنے میں پوری دنیا میں کردار ادا کرتے سکتے ہیں۔

اردکانیان نے کہا کہ ایران کا تمام ہمسایہ ممالک کے ساتھ بجلی کا رابطہ اس طرح ہے کہ ان ممالک کیساتھ سالانہ ایک قابل ذکر مقدار میں بجلی کا تبادلہ ہوتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہم شمال سے جنوب اور مغرب سے مشرق تک برقی راہداریوں کو چالو کرنے کی کوشش کر رہے ہیں اور اس وقت ابتدائی معاہدے ہوچکے ہیں اور یہ تکنیکی اور اقتصادی مطالعات کے لئے معاہدے کے مرحلے میں ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہم مشرق وسطی میں سب سے بڑی بجلی پیدا کرنے والے ملک کی حیثیت سے ایران کے بجلی کے نیٹ ورک کو یورپی ممالک سے مربوط کرنے کے لئے تیار ہیں۔

ایرانی وزیر توانائی نے کہا کہ یورپ ایران میں توانائی کے شعبے میں سرمایہ کاری کرنے سے اپنی مستقبل کی توانائی کی ضروریات کا ایک پائیدار حصہ پورا کرسکتا ہے۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
1 + 8 =