29 ستمبر، 2020 5:53 PM
Journalist ID: 1917
News Code: 84059258
0 Persons
ایران کا یمن میں قیدیوں کے تبادلہ کے معاہدے کا خیر مقدم

تہران، ارنا- ایرانی محکمہ خارجہ کے ترجمان نے قیدیوں کے تبادلے سے متعلق یمن کی مستعفی حکومت کیساتھ انصار اللہ کے معاہدے کا خیرمقدم کرتے ہوئے دونوں فریقوں سے معاہدے کو جلد سے جلد نافذ کرنے پر زور دیا ہے۔

خطیب زادہ نے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران اس معاہدے کو یمنی بحران کے پُرامن حل میں تعمیری قرار دیتا ہے اور اس معاہدے سے ظاہر ہوتا ہے کہ یمن انٹرا ڈائیلاگ کا انعقاد یمنی مسائل کا واحد حل ہے۔

انہوں نے اس امید کا اظہار کرلیا کہ اس معاہدے سے دیگر قیدیوں کی رہائی کا سلسلہ جاری رہے گا اور ساتھ ہی یمن انٹراڈائیلاگ کے انعقاد اور ساتھ ہی جنگ کے خاتمے کے شرایط کی فراہمی ہوگئی۔

واضح رہے کہ یمن میں انصاراللہ اور یمنی مستعفی حکومت کے درمیان تبادلے کے تحت تقریبا ایک ہزار قیدیوں کی رہائی پر اتفاق ہو گيا ہے؛ فریقین کے درمیان جنگ کے آغاز کے بعد سے یہ ایک بڑی پیش رفت ہے۔

اقوام متحدہ کے خصوصی سفیر برائے یمنی امور"مارٹن گریفتھ" نے ایک بیان میں کہا ہے ''آج کا دن ان ایک ہزار خاندانوں کے لیے بہت اہم ہے جو امید ہے کہ اپنے لواحقین اور پیاروں کا بہت ہی جلد پھر سے خیر مقدم کر سکیں گے۔''

یہ بات قابل ذکر ہے کہ انصار اللہ اور یمنی مستعفی حکومت کے درمیان 2014 سے جنگ جاری ہے اور اس دوران بھی فریقین میں کبھی کبھی قیدیوں کا تبادلہ ہوتا رہا ہے تاہم اس معاہدے کے تحت دونوں جانب کے 1081 قیدیوں کی رہائی کا فیصلہ ہوا ہے جو قیدیوں کی رہائی کا اب تک سب سے بڑا معاہدہ ہے۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
1 + 3 =