26 ستمبر، 2020 10:19 AM
Journalist ID: 2393
News Code: 84054246
0 Persons
دوسروں پر الزام لگانا  کچھ مغربی ممالک کی برتری کا وہم ہے

تہران، ارنا – جنیوا میں اسلامی جمہوریہ ایران کے سفیر اور مستقل نمائندے نے ایران کے خلاف متعدد یوروپی ممالک کے بے بنیاد الزامات کے جواب میں کہا کہ دوسروں پر الزام لگانا بعض مغربی ممالک کی نوآبادیاتی ذہنیت کا تسلسل اور برتری کا وہم ہے۔

یہ بات اسماعیل بقایی ہامانہ نے انسانی حقوق کونسل کے 45واں اجلاس میں مغربی ممالک کے ایک گروپ کے ایران میں انسانی حقوق کی صورتحال پر تنقید کیلیے مشترکہ بیان کے ردعمل پر کہی۔

انہوں نے کہا کہ افسوس کی بات ہے کہ کچھ ممالک دوسروں کو انسانی حقوق کا احترام کرنے کی سفارش کرتے ہیں جبکہ گزشتہ اور حال میں اپنے جرائم کو فراموش کرتے ہیں اور اس حقیقت کو چھپاتے ہیں کہ دوسروں کے مسائل کا ایک بڑاحصہ ان کی سامراجی پالیسیوں کی ذہنیت کا نتیجہ ہے۔

انسانی حقوق کے امور کے بارے میں مغربی نقطہ نظر پر تنقید کرتے ہوئے ایرانی سفیر نے ایسی پالیسی کو صرف ممالک کے مابین تفریق اور تنازعات کا سبب اور انسانی حقوق کو سیاسی مقاصد کے لئے ایک آلہ کار کے طور قرار دیتے ہوئے کہ کچھ یوروپی ممالک ہیومن رائٹس کونسل سے ترقی پذیر ممالک کے خلاف مداخلت کیلیے غلط استعمال کرتے ہیں۔

ہمارے ملک کے نمائندے نے انسانی حقوق کے تحفظ اور احترام کے لئے قانون کی حاکمیت کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے ہوئے کہا کہ انسانی حقوق کے تحت  گھریلو قانونی نظام کو تبدیل کرنے یا عدالتی کیسوں میں مداخلت کے لئے دوسری حکومتوں پر دباؤ ڈالنا ناقابل قبول ہے ۔

بقایی نے کہا کہ کونسل کے اہداف کو حاصل کرنے کا بہترین طریقہ غیر جانبداری اور دقیانوسی تصورات اور دوسروں پر الزام لگانے کے بغیر سے باہمی تعاون اور مذاکرات کرنا ہے۔

انہوں نے مقبوضہ علاقوں میں فلسطینیوں کے انسانی حقوق کی مسلسل خلاف ورزی کو انتباہ کرتے ہوئے انسانی حقوق کونسل سے ایک ایسی "حکومت" جس کا وجود دہشت گردی اور جارحیت پر مبنی ہے، کے ذریعہ انسانی حقوق کی سنگین پامالیوں کو معمول پر لانے کے روکنے کا مطالبہ کیا۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
9 + 7 =