ایران اور روس کے مابین علاقائی مسائل کو حل کرنے میں قریبی تعلقات ہیں

ماسکو، ارنا – ایرانی وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ ایران اور روس کے مابین علاقائی مسائل کو حل کرنے میں بہت قریبی رابطہ ہےجو دونوں فریقوں کے مابین باقاعدہ رابطوں کا موقع فراہم کرتا ہے۔

یہ بات محمد جواد ظریف نے بدھ کے روز ماسکو کے ہوائی اڈے پہنچنے پر صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہی۔

ایرانی وزیر خارجہ محمد جواد ظریف نے کہا کہ جوہری معاہدہ  ایرانی اور روسی وزرائے خارجہ کے مابین زیر بحث آنے والے اہم موضوعات میں شامل ہوگا۔

ظریف نے کہا کہ گذشتہ چند مہینوں میں جوہری معاہدے کے معاملے میں روسی حکومت ، اقوام متحدہ میں اس ملک کے مستقل نمائندے اور سلامتی کونسل میں چین کے ساتھ ساتھ وزارت خارجہ نے بہترین موقف کا اور امریکہ کے خلاف قائدانہ کردار کا ادا کیا ہے۔

ایرانی وزیر خارجہ نے ایران اور روس کے مابین بہت قریبی تعلقات کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ یہ تعلقات روسی ساتھیوں کے ساتھ رابطوں کا موقع فراہم کرتے ہیں، اور میرا موجودہ سفر کورونا کے پھیلنے کے دوران روسی دارالحکومت کا تیسرا سفر ہے۔

انہوں نے کہا کہ ایران اور روس کے مابین بہت قریبی رابطہ ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہمیں خطے میں شدید مشکلات ہیں۔ شام کے مسئلے کو خصوصی ہم آہنگی کی ضرورت ہے ، اور ہم آستانہ مذاکرات میں روس اور ترکی کے ساتھ رابطہ کریں گے۔

وزیر خارجہ نے افغانستان کے مسئلے کو ماسکو مذاکرات کا ایک اور موضوع قرار دیتے ہوئے کہا کہ طالبان اور افغانستان کی حکومت کے مابین امن مذاکرات اور طالبان کے مشکل مواقف کے پیش نظر اس مسئلے کو مزید جانچنے کی ضرورت ہے۔

انہوں نے ایران اور روس کے مابین اچھے تعلقات کا حوالہ دیتے ہوئے  کہا کہ ماسکو مذاکرات میں تعلقات اور تعاون کے فروغ دینے کے طریقوں کا جائزہ کریں گے ، اور یہ مذاکرات کا اہم حصہ ہوگا۔

قابل ذکر ہے کہ محمد جواد ظریف نے بدھ کے روز وزیر خارجہ کی حیثیت سے  پچھلے چھ ماہ میں ماسکو کے چوتھے دورے کیلیے روس پہنچ گئے۔

وہ اپنے روسی ہم منصب سرگئی لاوروف کے  ساتھ جوہری معاہدے، علاقائی اور دوطرفہ تعلقات پر تبادلہ خیال کریں |گے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
2 + 4 =