14 ستمبر، 2020 12:39 PM
Journalist ID: 2393
News Code: 84038401
0 Persons
ایران نے امریکی جریدے کی متعصبانہ رپورٹ کو مسترد کردیا

تہران، ارنا – ایرانی وزارت خارجہ کے ترجمان نے ایک امریکی جریدے میں شائع ہونے والی متعصبانہ اور جانبدارانہ رپورٹ میں ایران پر لگائے گئے الزامات پر ردعمل کا اظہار کیا۔

یہ بات سعید خطیب زادہ نے آج بروز پیر معروف امریکی آن لائن میگزین پولیٹیکو میں ایران کے خلاف شائع ہونے والی تحریر پر ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہی۔

انہوں نے کہا کہ اس میگزین میں شائع ہونے والے الزامات کو مسترد کرتے ہوئے بتایا کہ ہم امریکی عہدیداروں سے گزارش کرتے ہیں کہ بین الاقوامی سطح پر ایران مخالف ماحول پیدا کرنے کے لئے سڑے ہوئے طریقوں کے استعمال سے باز رہیں۔

امریکی میگزین پولیٹیکو نے امریکی خفیہ اطلاعات اور امریکی حکومت کے قریبی عہدے داروں کے حوالے سے یہ دعوی کیا ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران بدستور جنرل قاسم سلیمانی کے خلاف انتقام کی تلاش میں ہے۔

امریکی میگزین نے نامعلوم ذرائع کے حوالے سے دعوی کیا ہے کہ تہران ابھی بھی جنرل سلیمانی کے قتل کے بدلہ لینے کی کوشش کر رہا ہے۔کچھ امریکی عہدیداروں نے جنوبی افریقہ میں امریکی سفیر لانا مارکس کے خلاف دھمکیوں کا حوالہ دیا ہے۔

خطیب زادہ نے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران نے  بین الاقوامی برادری کے ایک ذمہ دار رکن کی حیثیت سے بین الاقوامی سفارتی اصولوں پر اپنی دیانتداری کی تصدیق کی ہے اور ایران کے برعکس امریکہ خاص طور پر حالیہ برسوں میں وائٹ ہاؤس میں موجودہ حکومت نے بین الاقوامی سطح پر مختلف سازشوں جن میں درجنوں قتل و غارت گری کے منصوبے پر عملدرآمد ، متعدد بین الاقوامی معاہدوں سے دستبرداری، علاقائی سالمیت کی خلاف ورزی اور انسداد دہشت گردی کے ہیرو کمانڈر سردار قاسم سلیمانی کا بزدلانہ قتل شامل ہیں، کے ساتھ سفارت کاری کے پہلے اصولوں کی خلاف ورزی کا مظاہرہ کیا ہے اور بین الاقوامی میدان میں باغی حکومت بن چکی ہے۔

خطیب زادہ کے مطابق اس طرح کی خبروں اور اقدامات جو شاید مستقبل میں بھی جاری رہے گی، یقینا بے نتیجہ ہوگی اور اسلامی جمہوریہ ایران کے خلاف واشنگٹن کی ناکامیوں کی لمبی فہرست میں اضافہ کرے گی۔

انہون نے کہا کہ جیسا کہ بار بار کہا گیا ہے کہ ایرانی حکومت شہید سلیمانی کے مجرمانہ اور بزدلانہ قتل کے سلسلے میں بین الاقوامی قانونی کارروائی کو جاری رکھے گی اور نہ ہی وہ اس دہشت گردانہ عمل کو معاف کرے گا اور نہ ہی اسے فراموش کرے گی۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
3 + 3 =