جوہری وعدوں میں کمی لانے کے چوتھے مرحلے کا بھر پور نفاذ کیا گیا ہے

تہران، ارنا- ایرانی جوہری ادارے کے سربراہ نے کہا ہے کہ جوہری وعدوں میں کمی لانے کے چوتھے مرحلے کا بھر پور نفاذ کیا گیا ہے اور اس کے مطابق فرڈو جوہری تنصیبات میں ایک ہزار 44 سنٹری فیوجز میں یورنیم کی افزودگی کی جاتی ہے۔

ان خیالات کا اظہار "سید علی اکبر صالحی" نے پارلیمنٹ کے اراکین کیجانب سے جوہری وعدوں کے چوتھے مرحلے کے عدم نفاذ سے متعلق بیانات کے رد عمل میں کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ فرڈو جوہری تنصیبات میں جوہری وعدوں میں کمی لانے کی پالیسیوں کا پورا نفاذ کیا گیا ہے۔

صالحی کا کہنا ہے کہ اس سلسلے میں ایک ہزار 44 سنٹری فیوجز میں یورنیم کی افزودگی کا عمل کیاجاتا ہے اور ہم نے اس حوالے سے اپنے ذمه داریوں کو نبھایا ہے۔

انہوں نے کہا کہ جوہری معاہدے کے مطابق ہم نے مذکورہ ایک ہزار 44 سنٹری فیوجز میں یورنیم کی افزودگی نہ کرنے کا وعدہ دیا تھا تا ہم ابھی جوہری وعدوں میں کمی لانے کے مطابق ضرورت کی بنا پر یورنیم کی افزودگی کا عمل جاری ہے۔

صالحی نے کہا کہ ہمیں سیاسی چیلجنوں میں عالمی سامراجیت کا شکار ہے؛ اسلامی جمہوریہ ایران انقلاب کے آغاز سے ہی اس چیلنج میں ہے اور آہستہ آہستہ اس چیلنج کا بہانہ ایٹمی مسئلہ بن گیا، لیکن آخر کار ہم اس چیلنج میں امریکہ کو الگ تھلگ کرنے میں کامیاب ہوگئے اور یہ اسلامی جمہوریہ ایران کے لئے ایک بہت ہی قابل قدر کامیابی ہے۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
4 + 0 =