جاپانی ماہر خاتون کی سماجی اور سائنسی سرگرمیوں میں ایرانی خواتین کے کردار کی تعریف

بیجنگ، ارنا – ایک جاپانی ماہر برائے ایرانی امور نے سماجی اور سائنسی سرگرمیوں میں ایرانی خواتین کے کردار کی تعریف کی۔

جاپانی ماہر اور یونیورسٹی کی پروفیسر محترمہ خاتون تویوکو موریتا نے جاپان میں ایرانی ثقافتی اتاشی کے زیر اہتمام منعقد ہونے والی خصوصی نشست'ایران میں خاندان کی پوزیشن' میں کہا کہ ایران سماجی اور سائنسی سرگرمیوں میں خواتین کی شرکت کے لیے ترقی یافتہ ممالک میں سے ایک ہے۔

جاپان میں واقع ایرانی سفارتخانے کے ثقافتی اتاشی کے خصوصی اجلاس کے تسلسل میں گزشتہ روز 'ایران میں خاندان کی پوزیشن' کے عنوان سے ایک خصوصی اور مجازی نشست منعقد ہوئی۔

انہوں نے ڈاکٹر علی شریعتی اور ڈاکٹر مرتضی مطہری جیسے ایرانی دانشوروں اور مفکرین کے نظریات اور خیالات کا حوالہ دیتے ہوئے بتایا کہ ڈاکٹر شریعتی نے حضرت فاطمہ(س) کو سب سے بہترین خاتون سمجھا جو ایرانیوں کی نظر میں بہت ہی عظیم اور مقدس ہے۔

انہوں نے کہا کہ ایرانی خواتین اعلی تعلیم حاصل کرنے کے ساتھ ساتھ معاشرے میں مختلف سیاسی، سائنسی ، ثقافتی شعبوں میں بھی سرگرم ہیں جس شعبے میں دنیا کے ترقی یافتہ ممالک میں سے ہے۔

اس نشست کے آغاز میں جس میں 70 سے زیادہ جاپانی شائقین نے شرکت کی تھی ،جاپان میں ایرانی سفارتخانے کے ثقافتی اتاشی حسین دیوسالار نے مختلف شعبوں میں ثقافتی سرگرمیوں خاص طور پر شائع شدہ کتابوں اور جریدوں کی وضاحت کی۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
3 + 1 =