لندن اپنے 40 سالہ قرض کی ادائیگی کیلئے عملی اور فوری اقدامات اٹھائے: ایران

تہران، ارنا-  ایرانی محکمہ دفاع نے ایک بیان میں برطانوی وزیر دفاع کیجانب سے برطانیہ پر ایران کے 40 سالہ قرضے کے اعتراف پر تبصرہ کرتے ہوئے اس کی جلد از جلد ادائیگی کیلئے عملی اقدامات اٹھانے کا مطالبہ کیا۔

 بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ ایرانی محکمہ دفاع کی کوششوں کے باوجود برطانوی کمپنی آئی ایم ایس نے فوجی معاہدوں پر عمل درآمد نہ ہونے کی وجہ سے ادائیگی سے انکار کردیا اوربین الاقوامی عدالتوں سمیت برطانوی عدلیہ میں بھی اس حوالے سے ایران کے حق میں رائے دی کی گئی ہے۔

 بیان میں کہا گیا ہے کہ تاہم برطانیہ میں متعلقہ حکام نے مختلف جھوٹے دعوے کے تحت اور غیر قانونی اور ظالمانہ پابندیوں کی بنا پر اپنے قرضوں کی ادائیگی سے انکار کردیا ہے اور بین الاقوامی میدان اور خاص طور پر ایرانی عوام کے نقطہ نظر میں اپنی ساکھ کو نقصان پہنچا ہے۔

ایرانی محکمہ دفاع نے کہا ہے کہ ایران پر برطانوی قرضے سے متعلق میں کوئی شک نہیں ہے اور وزارت دفاع مستقل طور پر اور سنجیدگی سے ایرانی عوام کے حقوق کے حصول کیلئے کوشاں ہے۔

 بیان میں کہا گیا ہے کہ ایک ایسے وقت جب برطانوی سکریٹری برائے دفاع نے بین الاقوامی اصولوں اور ضوابط کو مستحکم کرنے اور ایران کے قومی حقوق کو یقینی بنانے کیلئے ایران پر 40 سالہ برطانوی قرض کا اعتراف کیا ہے تو لندن سے ماضی کا ازالہ کرنے کیلئے عملی اور فوری اقدامات کرنے کی توقع کی جارہی ہے تاکہ ایرانی حکومت اور عوام کا برطانیہ کے بارے میں عدم اطمینان اور احتجاج جاری نہ رہے۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
1 + 4 =