10 ستمبر، 2020 11:47 AM
Journalist ID: 1917
News Code: 84033911
0 Persons
ایران کی پڑوسی ملکوں سے 25 ارب ڈالر کی تجارتی لین دین

تہران، ارنا- اسلامی جمہوریہ ایران کیخلاف امریکی دباؤ اور پابندیوں کے باوجود بھی ایران نے گزشتہ سال کے دوران پڑوسی ملکوں سے 25 ارب ڈالر تجارتی لین دین کی ہے۔

رپورٹ کے مطابق، غیر ملکی تعلقات میں بہتری لانے کے منصوبوں میں سے ایک 2019ء میں 15 پڑوسی ممالک کو سامان اور خدمات کی برآمدات کے حجم اور مختلف قسم کے اضافے کے منصوبے پر عملدرآمد کرنا تھا جو حکومت نے یہ کامیابی حاصل کی ہے؛ اس سلسلے میں، رواں سال کے پہلے تین مہینوں کے دوران ایران نے ہمسایہ ممالک کو 2.3 ارب ڈالر کی برآمدات کی ہیں۔

 البتہ ایران نے صرف پڑوسی ملکوں تک تجارتی تعلقات کو محدود نہیں رکھا ہے اور اس حوالے سے پابندیوں کے باوجود چین سے تعلقات کی توسیع کیلئے 25 سالہ تعاون کے منصوبے کے نفاذ کا بند و بست کر رہا ہے جبکہ کرونا وائرس کے پھیلاؤ کے باوجود ایران اور چین نے گزشتہ تین مہینوں کے دوران 1۔8 ارب ڈالر تجارتی لین دین کی ہے۔

چین سے تعاون منصوبے صرف توانائی کا تبادلہ اور تجارتی تعلقات کے شعبوں میں نہیں بلکہ تعلیم، تحقیقات اور ٹیکنالوجی کے شعبوں میں بھی تجربات کے تبادلہ پر مشتمل ہے۔

اس کے علاوہ ایران نے اپنے تجارتی تعلقات کی توسیع کیلئے 12 دیگر ملکوں سے مفاہمی یادداشت پر دستخط کیا ہے جن میں سے ایک یوریشین یونین سے آزاد تجارتی معاہدے پر دستخط تھا۔

اس کے علاوہ بینکنگ مسائل کی حل اور دنیا سے تجارتی تعلقات کا سلسلہ جاری رکھنے کا ایک اور طریقہ بارٹر سسٹم کا استعمال ہے؛ ایران نے گزشتہ سال کے دوران کان کنی کے شعبے میں 20 ہزار ارب تومان ضروری خام مال کی بارٹرسسٹم کے ذریعے فراہمی کی گئی ہے۔

 اس کے علاوہ اس حوالے سے ملک میں مصنوعات کی لوکلائزیشن میں اضافے اور غیر ضروری مصنوعات کی درآمدات کو کم کرنے کی منصوبہ بندی کی گئی ہے۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
6 + 8 =