10 ستمبر، 2020 11:01 AM
Journalist ID: 1917
News Code: 84033856
0 Persons
امریکی منافقت حیران کن ہے: ظریف

تہران، ارنا- اسلامی جمہوریہ ایران کے وزیر خارجہ نے امریکہ کیجانب سے ہتیھاروں کی فروخت اور تیاری پر خرچات کا حوالہ دیتے ہوئے اس کے اس طرح منافقانہ اقدامات کو حیران کن قرار دے دیا۔

"محمد جواد ظریف" نے ایک ٹوئٹر پیغام میں مزید کہا کہ امریکہ اس بات پر زور دے رہا ہے کہ ایران کو پرامن جوہری توانائی استعمال نہیں کرنا چاہئے، دفاعی سازوسامان نہیں خریدنا چاہئے، دفاعی میزائل تعمیر نہیں کرنا چاہئے اور اب امریکہ نئے بین البراعظمی بیلسٹک میزائلوں پر 100 بلین ڈالر خرچ کر رہا ہے اور "نئے" جوہری ہتھیاروں کو ذخیرہ کررہا ہے اور اپنے علاقائی صارفین کو 380 بلین ڈالر کے ہتھیار بھیج رہا ہے؛ یہ منافقت حیرت کی بات ہے۔

ظریف نے اپنے توئٹر پیغام میں امریکی فضائیہ کیجانب سے "مینوتمن 3" بین البراعظمی بیلسٹک میزائل کو تبدیل کرنے کے لئے انجینئرنگ اور ترقی کے 13.3 بلین ڈالر کے معاہدے سے متعلق ایسوشیٹڈ پریس کی خبر کا منسلک کیا ہے۔

صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے "ایک نئے خفیہ ہتھیاروں کے نظام" کے بارے میں امریکی صحافی "باب ووڈورڈ" کیساتھ انٹرویو میں تبصرے بھی اس پیغام سے منسلک ہیں۔

اگلے ہفتے شائع ہونے والی اپنی نئی کتاب "ریج" میں ووڈوارڈ لکھتے ہیں کہ ٹرمپ نے انھیں اپنے ایک انٹرویو میں کہا تھا کہ "میں نے ایک ایٹمی ہتھیاربنایا ہے؛ ایک ہتھیاروں کا نظام بنایا ہے جو اس سے پہلے ملک میں کبھی نہیں تھا۔"

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
3 + 3 =