پاک ایران فوجی تعاون خطے میں امن اور استحکام پر مثبت اثرات مرتب کرتا ہے

تہران، ارنا - ایران میں قائم پاکستانی سفارت خانے کے فوجی اور دفاع کے اہلکار نے کہا ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران اور پاکستان کے درمیان فوجی تعاون خطے میں امن اور استحکام پر مثبت اثر ڈالتا ہے۔

یہ بات بریگیڈیئر جنرل "عمران کاشف چودھری" نے اتوار کے روز پاکستانی یوم دفاع اور شہداء کی یاد میں تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔
انہوں نے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران ، پاکستان کے ایک اہم ترین پڑوسی ملک ہے اور ہم اس کے ساتھ تعلقات پر اہمیت دیتے ہیں۔
جنرل چودھری نے کہا کہ حالیہ برسوں میں دونوں ممالک کے درمیان فوجی تعاون میں بہتری آئی ہے جس تعاون کا اندازہ مختلف دوروں میں کیا جاسکتا ہے، پاکستانی وزیر دفاع جنرل قمر جاوید باجوہ دو طرفہ فوجی تعلقات کو بہتر بنانے کے لئے اب تک دو بار تہران کا دورہ کر چکے ہیں ، جو اہم ہے۔
انہوں نے مزید کہا کہ ایرانی مسلح افواج کے سربراہ میجر جنرل محمد باقری نے بھی 2018 میں اسلام آباد کا دورہ کیا تھا اور ہم مستقبل میں ان کے اگلے دورے کا انتظار کر رہے ہیں۔
کاشف چوہدری نے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران اور پاکستان کے درمیان فوجی تعاون کا خطے میں امن اور استحکام پر مثبت اثر پڑتا ہے۔
 انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ ہم مسئلہ کشمیر میں ایرانی سپریم لیڈر کے موقف کے بہت شکر گزار ہیں اور ہم بھی جوہری معاہدے پر ایران کے مؤقف کی مخلصانہ حمایت کرتے ہیں۔
انہوں نے کہا کہ پاکستان اور ایران میں بہت کچھ مشتراکات موجود ہے اور ہمیں یقین ہے کہ آئندہ بھی ہمارے تعاون میں اضافہ ہوگا۔
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
6 + 3 =