ویانا کے اجلاس میں شریک افراد نے ایران پر پابندیاں عائد کرنے کی امریکی تجویز کو مسترد کردیا

ماسکو، ارنا – روسی نائب وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ ویانا میں اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے اجلاس میں شریک افراد نے ایران پر عائد پابندیاں بحال کرنے کے امریکی تجویز کو مسترد کردیا۔

روسی سنیئر جوہری مذاکرات کار 'سرگئی ریابکوف جنہوں نے ویانا میں جوہری معاہدے کے مشترکہ کمیشن میں شرکت کی ہے، منگل کے روز صحافیوں کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ہم امریکی تجویز کو مسترد کرنے (ایران پر پابندیاں بحال کرنے کیلیے) کے بارے میں جوہری معاہدے کے مشترکہ کمیشن میں شریک افراد کی ہم آہنگی کا مشاہدہ کر رہے ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ ہمیں یقین ہے کہ آج کی میٹنگ کا نتیجہ نیو یارک میں ہمارے شراکت داروں کے کام  کو جاری رکھنے میں مدد کرے گا۔

ریابکوف نے کہا کہ اس اجلاس میں شریک تمام افراد نے  ایک بار پھر جوہری معاہدے کو  برقرار رکھنے پر زور دیا۔

واضح رہے کہ جوہری معاہدے کے مشترکہ کمیشن کے 16 ویں اجلاس کا منگل کے روز کو ماہرین کی سطح پر انعقاد کیاگیا نائب ایرانی وزیر خارجہ  برائے سیاسی امور "سید عباس عراقچی" اور یورپی یونین کی خارجہ پالیسی کی نائب سربراہ "ہلگا اشمید" نے اس اجلاس کی قیادت کی۔

اس معاہدے کے اراکین امریکی یکطرفہ اقدامات کیخلاف مقابلہ کرنے اور ایران جوہری معاہدے کے تحفظ کی کوشش کرنے کیلئے پختہ عزم رکھتے ہیں۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
2 + 14 =