جوہری معاہدے کے اراکین امریکہ کو اس معاہدے کا شراکت دار نہیں سمجھتے ہیں: عراقچی

لندن، ارنا- نائب ایرانی وزیر خارجہ برائے سیاسی امور نے کہا ہے کہ ایران جوہری معاہدے کے اراکین، امریکہ کو اس معاہدے کا شراکت دار نہیں سمجھتے ہیں اور اس کیلئے جوہری معاہدے کے میکنزم یا کہ سلامتی کونسل کی قرارداد 2231 کے استعمال کرنے کا حق نہیں رکھتے ہیں۔

ویانا کے دورے پر آئے ہوئے "سید عباس عراقچی" نے کہا کہ جوہری معاہدے کے دیگر اراکین امریکہ کیجانب سے اسنیپ بیک میکنزم کے استعمال کی کوششوں کو غیر قانونی قرار دیتے ہوئے اس بات پر یقین رکھتے ہیں کہ امریکہ کا یہ اقدام موثر ثابت نہیں ہوگا۔

انہوں نے منگل کے روز آئی آر آئی بی نیور ایجنسی کیساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ جوہری معاہدے کے اراکین سمیت بین الاقوامی برادری اور اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے ممبران کا بھی یہی موقف ہے۔

نائب ایرانی وزیر خارجہ نے کہا کہ جوہری معاہدے کے مشترکہ کمیشن کے 16 ویں اجلاس میں امریکہ کے ممکنہ اقدامات پر بھی بات چیت ہوئی لیکن جوہری معاہدے کے سارے اراکین اس معاہدے کو سفارتکاری کی عظیم کامیابی قرار دیتے ہوئے اس کے تحفظ پر زوردیا۔

انہوں نے کہا کہ ایران جوہری معاہدے کے سارے ارکین اس معاہدے کے بھر پور نفاذ کے خواہاں ہیں اور ایران کیجانب سے جوہری وعدوں میں کمی لانے سے متعلق ان کی مختلف رائے ہیں۔

عراقچی نے کہا کہ ہم بھی ان سے ایران کیخلاف عائد پابندیوں کو اٹھانے سے متعلق اپنے کیے گئے وعدوں پر عمل کرنے کا مطالبہ کرتے ہیں۔

واضح رہے کہ جوہری معاہدے کے مشترکہ کمیشن کے 16 ویں اجلاس کا آج بروز منگل کو ماہرین کی سطح پر انعقاد کیا؛ نائب ایرانی وزیر خارجہ  برائے سیاسی امور "سید عباس عراقچی" اور یورپی یونین کی خارجہ پالیسی کی نائب سربراہ "ہلگا اشمید" نے اس اجلاس کی قیادت کی۔

اس معاہدے کے اراکین امریکی یکطرفہ اقدامات کیخلاف مقابلہ کرنے اور ایران جوہری معاہدے کے تحفظ کی کوشش کرنے کیلئے پختہ عزم رکھتے ہیں۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

متعلقہ خبریں

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
3 + 13 =