یو اے ای اور صہیونی ریاست کے درمیان تعلقات علاقائی امن و سلامتی کیلئے نقصاندہ ہے: ایرانی عہدیدار

تہران، ارنا- ایرانی اسپیکر کے معاون خصوصی برائے بین الاقوامی امور نے متحدہ عرب امارات کیجانب سے صہیونی ریاست کیساتھ تعلقات استوار کرنے کے اقدام اور ساتھ ہی خطے کے بعض عرب ملکوں کیجانب سے صہیونی ریاست کا ساتھ دینے کو ایک بچگانہ شو قرار دیتے ہوئے ان جیسے اشتعال انگیز اقدامات کی مذمت کی۔

ان خیالات کا اظہار "حسین امیر عبدالہیان" نے فلسطین کی قومی اسمبلی کے سربراہ "سلیم الزعنون" کیساتھ ایک ٹیلی فونک رابطے کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

اس موقع پر انہوں نے فلسطینی مجاہدوں اور فلسطینی بہادر قوم کیلئے نیک خواہشات کا اظہار کرلیا۔

امیر عبدالہیان نے کہا کہ صہیونی قبضے کے چنگل سے اپنے تاریخی اور مادر وطن کی مکمل آزادی کے لئے فلسطینی عوام کی جائز جدوجہد کی راہ میں مزاحمت ایک الہی وعدہ ہے جو یقینی طور پر پورا ہوگا۔

انہوں نے متحدہ عرب امارات کیجانب سے صہیونی ریاست کیساتھ تعلقات استوار کرنے کے اقدام اور ساتھ ہی خطے کے بعض عرب ملکوں کیجانب سے صہیونی ریاست کا ساتھ دینے کو ایک بچگانہ شو قرار دیتے ہوئے ان جیسے اشتعال انگیز اقدامات کی مذمت کی۔

انہوں نے مزاحمت کو طاقتور، متحرک، ہوشیار اور منظرعام پر موجود قرار دیتے ہوئے کہا کہ آج مزاحمتی قوت فلسطینی عوام کے مطالبات پر عمل کرنے پر صہیونی حکومت کو مجبور کرنے کی طاقت رکھتی ہے۔

اس موقع پر فلسطین قومی اسمبلی کے سربراہ نے ایرانی سپریم لیڈر کیجانب سے فلسطینی عوام اور حکومت پر خصوصی توجہ دینے کا شکریہ ادا کیا۔

انہوں نے خطے کے بعض عرب ملکوں کیجانب سے فلسطینی ارمان کیساتھ غداری کی تنقید کرتے ہوئے  ناجائز صہیونی ریاست سے تعلقات استوار کرنے اور فلسطینی عوام کے حقوق کو پایمال کرنے کی عالمی مذمت کا مطالبہ کیا۔

سلیم الزعنون نے ایک پیغام میں ایرانی اسپیکر محمد باقر قالیباف کو پارلیمنٹ کے سربراہی کا عہدہ سنبھالنے پر مبارکباد دیتے ہوئے ان کیلئے نیک خواہشات کا اظہار کرلیا۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

متعلقہ خبریں

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
5 + 8 =