پاکستان میں ایرانی جہاز پر قبضہ کرنے کیلیے ایرانی سفیر کا ردعمل

اسلام آباد، ارنا – پاکستان میں تعینات ایرانی سفیر نے کراچی کی بندرگاہ پر ایرانی آئل ٹینکر کو حراست میں میں لینے کے الزامات پر رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہمیں پاکستانی حکام کی طرف سے کوئی سرکاری رپورٹ موصول نہیں ہوئی ہے۔

یہ بات سید محمد علی حسینی نے منگل کے روز ارنا کے نمائندے کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہی۔
انہوں نے کراچی بندرگاہ میں ایرانی آئل ٹینکر کو قبضےمیں لینے  پر ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اب تک ہمیں  کوئی سرکاری رپورٹ پیش نہیں کی گئی ہے۔

حسینی نے کہا کہ پاکستانی میڈیا میں ایرانی تیل کی اسمگلنگ کی بات ہے جس بات کی درستگی کو تکنیکی اور پیشہ ورانہ رائے کی ضرورت ہے۔

ایرانی سفیر نے بتایا کہ اس خبروں میں اس جہاز کی ملکیت اور تعلق کے حوالے سے کوئی بات نہیں کی گئی ہے۔

ایرانی سفیر نے کہا کہ کچھ نیوز ذرائع کا دعوی ہے کہ پاکستان نے امریکہ کی درخواست پر  کراچی کے ساحل سے نام نہاد ایرانی تیل لے جانے والا جہاز کو قبضے میں لے لیا ہے حالانکہ ابھی تک کسی پاکستانی اہلکار نے اس معاملے پر کوئی تبصرہ نہیں کیا ہے۔

پاکستانی سینیٹر رحمان ملک نے اپنے ایک بیان جاری میں جس میں ایرانی اسمگل شدہ تیل پر قبضہ سے متعلق پاکستانی وزارت داخلہ اور پاکستانی فیڈرل انویسٹی گیشن ایجنسی (ایف آئی اے (FIA)  سے ایک جامع رپورٹ فراہم کرنے کی اپیل کی ہے۔

یاد رہے کہ پاکستانی میڈیا نے ہفتہ (8 اگست) کو اطلاع دی ہے کہ تیل لے جانے والے ایک ایرانی آئل ٹینکر کو کراچی کے ساحل میں پکڑ لیا گیا ہے۔

 ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
6 + 0 =