ایران کا جوہری توانائی کے استعمال کے حق کا دفاع کرتے ہیں: روس

ماسکو، ارنا – ویانا میں قائم عالمی تنظیموں میں تعینات روسی مستقل مندوب نے کہا ہے کہ ہم این پی ٹی معاہدے کے مطابق، اسلامی جمہوریہ ایران کا جوہری توانائی کے استعمال کے حق کا دفاع کرتے ہیں۔

یہ بات "میخائل اولیانوف" نے پیر کے روز اپنے ٹوئٹر پیج میں واشنگٹن میں قائم فاؤنڈیشن برائے دفاع برائے جمہوریہ جو اسرائیلی حکومت سے بھی وابستہ ہے ، کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر "مارک دوبوویچ" کے ٹوئٹ پر اپنے ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہی۔
مارک دوبوویچ نے کہا کہ متحدہ عرب امارات سونے کے معیار کی پیروی کرتا ہے اور اس نے اپنی سرزمین پر تابکار مادے تیار کرنے سے انکار کردیا ہے جو ایران کے برعکس ، ایٹم بم بنانے کے لئے استعمال کیا جاسکتا ہے۔
اولیانوف نے اس ٹوئٹ کے جواب میں کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران کو این پی ٹی کے تحت جوہری سہولیات فراہم کیا گیا ہے جو مکمل طور پر قانونی ہے کیونکہ وہ ابھی تک فوجی مقاصد کے لئے استعمال نہیں ہوئے ہیں۔
انہوں نے مزید کہا کہ بین الاقوامی جوہری توانائی ایجنسی کا کام فوجی مقاصد کے لئے جوہری مادے کی عدم تبدیلی کی تصدیق کرنا ہے۔ جو لوگ اس سے اتفاق نہیں کرتے وہ ایٹمی عدم پھیلاؤ معاہدے کے خلاف کارروائی کر رہے ہیں۔
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
2 + 3 =