آسٹرین سفیر نے ایران سے سائنسی شعبوں میں تعاون کو سراہا

شہرکرد، ارنا- ایران میں تعینات آسٹرین سفیر نے کرونا وائرس کی وجہ سے عائد کی گئی پابندیوں کے باجود ایران اور آسٹریا کے سائنسدانوں کے درمیان ویڈیو کانفرنس کے ذریعے سائنسی تعاون کو سراہتے ہوئے کہا کہ اس صورتحال میں سمارٹ حل استعمال کرنے کی کوشش کی گئی ہے۔

انہوں نے ایران اور آسٹریا کے درمیان تاریخی تعلقات پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ دونوں ملکوں کے درمیان 700 سالوں پر پھیلے ہوئے پرانے تعلقات 500 سالوں کیلئے شراکت داری اور 160 سالوں کیلئے تذویری تعلقات ہیں۔

ان خیالات کا اظہار "اشتفان شلتس" نے اتوار کے روز آسٹریا اور ایران کے جنوب مغربی صوبے چہارمحال و بختیاری کے درمیان تعاون سے متعلق منعقدہ اجلاس کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ ایران میں قائم آسٹریا کی مستقل ثقافتی ایسوسی ایشن کے زیر اہتمام میں گزشتہ سال کے دوران ایران میں 130 ثقافتی پروگرامز کا انعقاد کیا گیا۔

انہوں نے کہا کہ ہمارے اور صوبے چہارمحال و بختیاری کے عہدیداروں کے درمیان اچھے تعلقات کی وجہ سے ہم اس صوبے میں ثقافتی پروگرام انعقاد کرنے میں دلچسبی رکھتے ہیں۔

شلتس نے کہا کہ آسٹریا کی ایران میں مستقل ثقافتی تنظیم ہے اور اس سے ہمارے ثقافتی تعلقات کو مستحکم کرنے کا ایک اچھا پلیٹ فارم مہیا ہوا ہے۔

آسٹرین سفیر نے ایران اور آسٹریا کے عہدیداروں کے درمیان باہمی اعتماد پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ  ہم صوبے چہارمحال و بخیتاری سے معاشی اور ثقافتی تعلقات قائم کرنے اور اس صوبے میں ثقافتی منصوبے انعقاد کرنے میں دلچسبی رکھتے ہیں۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

متعلقہ خبریں

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
2 + 10 =