علاقائی معاشی منصوبے تہران اسلام آباد کے تعلقات کو بڑھانے کا ایک موقع ہے

اسلام آباد، ارنا - اسلامی جمہوریہ ایران اور پاکستان کے متعدد سینئر سفارتکاروں، ماہرین اور مفکرین نے تہران اور اسلام آباد کے مابین دوطرفہ اور علاقائی تعاون کی مضبوطی پر زور دیتے ہوئے کہا ہے کہ علاقائی منصوبوں جیسے ایران اور چین کے اسٹریٹجک تعاون منصوبے کے ساتھ ہی پاک چین مشترکہ اقتصادی راہداری کی صلاحیتوں سے دوطرفہ تعلقات کے فروغ کے لئے استعمال کیا جانا چاہئے۔

ایرانی وزارت خارجہ کی انسٹی ٹیوٹ برائے پولیٹیکل اینڈ انٹرنیشنل اسٹڈیز (آئی پی آئی ایس) اور پاکستانی انسٹی ٹیوٹ آف اسٹریٹجک اسٹڈیز (ISSI)کے درمیان مذاکرات کا 16 ویں دور کا گزشتہ روز ایران اور پاکستان کے متعدد سینئر سفارتکاروں، ماہرین اور مفکرین کی موجودگی میں ویڈیو کانفرنس کے طور پر منعقد کیا گیا۔

یہ نشست ویبنار کے طور پر ایرانی وزیر خارجہ کے نائب 'محمد کاظم سجاد پور' اور پاکستانی انسٹی ٹیوٹ آف اسٹریٹجک اسٹڈیز کے سربراہ خالد محمود کی صدارات میں منعقد ہوئی۔

اس ویبنار میں ایران اور پاکستان کے ماہرین نے دوطرفہ تعلقات، افغانستان کے حوالے سے دونوں ممالک کے مابین تعاون ، ایران اور پاکستان کے مابین باہمی تعاون کی راہ میں امریکی رکاوٹوں پر تبادلہ خیال کیا۔

انہوں نے کہا کہ ایران اور پاکستان دونوں ہی دہشت گردی کی لعنت کا شکار ہیں تو دونوں ممالک اس چیلنج سے نمٹنے کیلیے باہمی تعاون کرنا ناگزیر ہیں۔

پاکستانی ماہرین نے علاقائی اقتصادی منصوبوں کی اہمیت کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ دونوں ممالک علاقائی منصوبوں کو باہمی تعاون کو فروغ دینے کا ایک موقع میں تبدیل کر سکتے ہیں

اس ویبنار میں اس بات پر زور دیا گیا کہ اسلامی جمہوریہ ایران اور پاکستان کو خواتین کے حقوق کے تحفظ کے حوالے سے ایک واضح اور مضبوط موقف اختیار کرنا چاہئے۔

انہوں نے ایکران ایران پاکستان کے مشترکہ سرحدی علاقوں پر پائیدار سلامتی خطے میں خوشحالی اور ترقی خاص طور پر سرحد پار تجارت میں معاون ہے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
6 + 6 =