ایران پر الزام لگانے کے بجائے یمنی خواتین اور بچوں پر اتحادی حملوں کو روکیں: ایران

تہران، ارنا - ایرانی وزارت خارجہ کے ترجمان نے خلیج فارس تعاون کونسل کے نئے سکریٹری جنرل کو مشورہ دیا کہ وہ اسلامی جمہوریہ ایران کے خلاف پروپیگنڈے اور بے بنیاد الزامات کو جاری رکھنے کیلیے کچھ ممبروں کے تباہ کن کردار کی پیروی کی بجائے یمنی خواتین اور بچوں پر اتحادیوں کے حملے کو روکے۔

 یہ بات سید عباس موسوی نے یمن سے متعلق خلیج فارس تعاون کونسل کے سکریٹری جنرل 'نایف الحجرف' کے من گھرٹ الزامات کے ردعمل پر کہی۔

موسوی نے کہا کہ ہم خلیج فارس تعاون کونسل کے نئے سکریٹری جنرل کو سفارش کرتے ہیں کہ وہ اسلامی جمہوریہ ایران کے خلاف جھوٹ الزامات کے تسلسل کیلیے اس کونسل کے کچھ ممبروں کے تباہ کن کردار کی حمایت کے بجائے یمنی نہتے خواتین اور بچوں پر اتحادیوں کے حملوں کو روکنے کی ضرورت پر توجہ کرے اور یمنی یمنی مذاکرات کے ذریعے یمنی بحران کے حل میں مدد کرے۔

قابل ذکر ہے کہ خلیج فارس تعاون کونسل کے کچھ ممبران خطے کی عرب اور اسلامی ممالک کی خواہش کے خلاف امریکہ اور صیہونی حکومت کی جانب سے عالم اسلام اور مظلوم فلسطینی قوم کے بنیادی مسائل اور خطرات کے بارے میں خاموش ہیں انہوں نے یمنی مظلوم عوام پر بمباری کے ساتھ ساتھ  کرونا کے پھیلنے سے نمٹنے کے لئے خوراک ، ایندھن اور ادویات کی فراہمی کو روکا ہے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
3 + 0 =