ایران کو جوہری معاہدے کے فوائد سے فائدہ اٹھانا چاہئے: آسٹریا

لندن، ارنا - آسٹریا کی وزارت خارجہ نے جوہری معاہدے کی پانچویں برسی کے موقع پر ایک بیان جاری کیا جس میں کہا گیا ہے کہ تمام فریقین کو ایک دوسرے سے اس معاہدے کو مکمل طور پر نافذ کرنے کے لئے ایک راستہ تلاش کرنے پر اتفاق کرنا ہوگا جس کے مطابق ایران جوہری معاہدے کے معاشی فوائد سے لطف اندوز ہوئے۔

اس بیان میں آیا ہے کہ آسٹریا ایران کے ساتھ جوہری مذاکرات کا میزبان کی حیثیت سے ، اس معاہدے کی حفاظت کے لئے ایک الگ ذمہ داری نبھا رہا ہے۔

پانچ سال قبل ، 14 جولائی 2015 کو اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل اور یوروپی یونین کے مستقل ممبروں نے ویانا میں جامع مشترکہ ایکشن پلان (جے سی پی او اے) پر دستخط کیے۔

اس بیان کے مطابق، چونکہ ویانا میں جوہری معاہدے کے بارے میں بات چیت ہوئی ہے لہذا آسٹریا نےاس معاہدے کو برقرار رکھنے کے لئے ایک الگ ذمہ داری قبول کی ہے  اور بغیر کسی ہچکچاہٹ کے اس معاہدے کو بچانے کے لئے یوروپی یونین کے دیگر ممبران کے ساتھ کھڑا ہے۔

اس بیان کے مطابق، چونکہ ویانا میں جوہری معاہدے کے بارے میں بات چیت ہوئی ہے لہذا آسٹریا نےاس معاہدے کو برقرار رکھنے کے لئے ایک الگ ذمہ داری قبول کی ہے  اور بغیر کسی ہچکچاہٹ کے اس معاہدے کو بچانے کے لئے یوروپی یونین کے دیگر ممبران کے ساتھ کھڑا ہے۔

آسٹریا کی وزارت خارجہ نے اپنے بیان کے آخر میں بتایا کہ  ویانا نے کسی بھی یکطرفہ کارروائی جو جوہری معاہدے کی کمزوری کا باعث ہے، پر افسوس کا اظہار کیا ہے اور امید ہے کہ تمام فریق اس معاہدے پر مکمل طور پر عمل درآمد کرنے  پر اتفاق اور اس معاہدے کے معاشی ثمرات سےایران کو فائدہ اٹھانے کے مواقع فراہم کریں۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
2 + 14 =