امریکہ اور ڈرون کے میزبان ملک کو سردار سلیمانی کے قتل کا جوابدہ ہونا چاہیئے: ایران

لندن، ارنا – جنیوا میں قائم اقوام متحدہ میں تعینات ایرانی مستقل سفیر نے کہا ہے کہ ڈرون کے میزبانی کرنے والا ملک اور امریکہ جنرل سلیمانی کے قتل کا جوابدہ ہونا چاہیئے۔

یہ بات "اسماعیل بقایی ہامانہ" نے جمعرات کے روز اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی 44ویں نشست سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔
انہوں نے کہا کہ جنرل سلیمانی کا قتل ایک غیر قانونی عمل اور ایک بہت بڑا قتل تھا اور اس سے عالمی امن و استحکام خطرے میں پڑتا ہے۔
بقایی نے کہا کہ یہ واقعہ نہ صرف بین الاقوامی قوانین بلکہ انسانی حقوق کی بھی خلاف ورزی ہے جس کارروائی میں اسلامی جمہوریہ ایران خود مختار ملک کے  ایک بزرگ اہلکار کو نشانہ بنایا گیا۔
انہوں نے کہا کہ امریکہ جنرل سلیمان پر حملہ کرنے کی ضرورت سے متعلق مضبوط ثبوت اور وعدہ نوٹس ظاہر نہیں کرسکتا۔
اقوام متحدہ کے ریپورٹر نے کہا کہ یہ حملہ اقوام متحدہ کے قوانین کی خلاف ورزی ہے۔
یہ بات قابل ذکر ہے کہ 3 جنوری کو عراق کے دارالحکومت بغداد کے ایئرپورٹ پر امریکہ کی جانب سے راکٹ حملے کیے گئے جس کے نتیجے میں پاسداران انقلاب  کے کمانڈر قدس جنرل قاسم سلیمانی سمیت عراق کی عوامی رضاکار فورس الحشد الشعبی کے ڈپٹی کمانڈر "ابومهدی المهندس" شہید ہوگئے۔
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
4 + 5 =