امریکہ اور صہیونی ریاست کو ایران کو سرمایہ کاری کرنے کیلئے بدامن دیکھانے کا ارادہ ہے

تہران، ارنا- نائب ایرانی وزیر خارجہ برائے بین الاقوامی اور قانونی امور نے کہا ہے کہ امریکہ اور ناجائز صہیونی ریاست کے اقدامات کا مقصد یہ ہے کہ وہ ایران کو تعلقات برقرار کرنے اور سرمایہ کاری کرنے کیلئے بدامن اور غیر محفوظ دکھائی دیں۔

ان خیالات کا اظہار "محسن بہاروند" نے اج بروز پیر کو محکمہ خارجہ کے عہدیداروں اور سنئیر نائب ایرانی صدر سے ایک ملاقات میں گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ معاشی ترقی کے عناصر فطری طور پر معاشی نہیں ہوتے ہیں؛ در حقیقت معاشی ترقی ان امور میں ہے جو فطری طور پر معاشی نہیں ہوتے ہیں جیسے انسانی حقوق کی پاسداری، قانون سازی اور نظام اور منصفانہ عدالتیں لہذا اگر ہم صرف ایگزیکٹو امور میں سرگرم رہیں تو ہم بنیادی کاموں کیلئے تیاری حاصل نہیں کر سکتے۔

بہاروند نے کرپشن کیخلا مقابلہ کرنے کیلئے ایرانی عدلیہ کی کارکردگی کو سراہتے ہوئے کہا کہ اگر ہم صرف سزائیں کا ذکر کریں تو اسے معاشس بد امنی کے علاوہ سرمایہ کاروں میں کمی کا باعث ہوگا لہذا ہمیں حوصلہ افزائیوں کا ذکر بھی کرنا ہوگا۔

انہوں نے کہا کہ بین الاقوامی معاملات اندرونی معاملات پر اثرات مرتب کریں گے لہذا ہمیں بین الاقوامی معاملات پر توجہ دینی ہوگی۔

بہاروند نے کہا کہ امریکہ اور ناجائز صہیونی ریاست کے اقدامات کا مقصد یہ ہے کہ وہ ایران کو تعلقات برقرار کرنے اور سرمایہ کاری کرنے کیلئے بدامن اور غیر محفوظ دکھائی دیں لہذا ہمیں ان کے اس اقدامات کیخلاف ایرانی- اسلامی نرم تحریک کو آگے بڑھنا ہوگا۔

انہوں نے کہا کہ ہم جو بھی اقدام کرتے ہیں اس میں ہمیں ایران کے مفادات اور ایرانیوں کی روزی روٹی پر غور کرنا چاہئے؛ بین الاقوامی قانون میں ایسے معاملات ہیں جن کو حل کرنا آسان ہے، لیکن بدقسمتی سے ہم تضادات کی تعداد کو کم کرنے کی کوشش نہیں کررہے ہیں۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
3 + 0 =