امریکی یوم آزادی اس کے حکمرانوں کے یوم شرم میں بدل گیا

تہران، ارنا- ایرانی انسانی حقوق کونسل کے سیکرٹری نے کہا ہے کہ یوم آزادی کے موقع پر امریکی عوام کیجانب سے امریکی جھنڈے کو نذز آتش کرنے نے در اصل اس یوم کو امریکی حکمرانوں کے یوم شرم میں بدل دیا۔ 

تفصیلات کے مطابق؛ امریکی یوم آزادی کے موقع پر صدرٹرمپ کے خطاب کے وقت امریکی مظاہروں نے وائٹ ہاوس کے سامنے امریکی پرچم کو نذر آتش کردیتے ہوئے پورے ملک میں امتیازی سلوک اور نسل پرستی کے خاتمے کا مطالبہ کیا۔

اس کے علاوہ پولیس فورسز نے امریکہ کے مختلف شہروں میں نسل پرستی کیخلاف مظاہرین کو گرفتار کرنے کیلئے بڑے پیمانے پر آپریشن کا بند و بست کر لیا تھا۔

اس حوالے سے ایرانی انسانی حقوق کونسل کے سیکرٹری "علی باقری" نے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ آج، پہلے سے کہیں زیادہ دنیا امریکی جبر کیخلاف مقابلہ کرنے کیلئے ایرانی عوام کی اسٹریٹجک ذہانت کا مشاہدہ کررہی ہے کیونکہ اب امریکی جھنڈے کو بھی اس ملک کے اندر اور امریکی شہریوں میں غلامی، نسل پرستی اور تسلط کی علامت کے طور پر تسلیم کیا گیا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ یوم آزادی کے موقع پر امریکی شہریوں کے ذریعے امریکی پرچم کو نذر آتش کرنے نے "امریکی یوم آزدی کے فیسٹیول" کو "نسل پرستی اور غلامی کے سوگ" میں تبدیل کردیا جس کی وجہ سے "احتجاج اور آنسو" نے "خوشی اور ہنسی" کی جگہ لے لی اور اس یوم کو امریکی حکمرانوں کے یوم شرم میں بدل دیا۔

باقری نے کہا کہ امریکی یوم آزادی کے موقع پر وائٹ ہاؤس اور کانگریس میں واشنگٹن کے حکمرانوں کیخلاف امریکی مظاہروں کی آواز نے عوام سے امریکی حکمرانوں کی بیگانگی کا دنیا کے سامنے مظاہرہ کردیا اور ساتھ ہی اور مادی خوشحالی اور روحانی سکون سے مالا مال انسانی معاشرے کی تشکیل میں ان کے لبرل جمہوریت کے جھوٹے دعوے کا بے نقاب کر دیا۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
8 + 1 =