ایران میں حیاتیاتی ایندھن کے استمعال بغیر بجلی کی ایک چوتھائی حصے کی پیداوار

تہران، ارنا- ایران میں گزشتہ سال کے دوران ملک کی مجموعی بجلی کی ایک چوتھائی سے زائد حصے کی حیاتیاتی ایندھن کے بغیر استمعال سے پیداوار کی گئی۔

ایرانی محکمہ توانائی کے مطابق، گزشتہ سال کے دوران، ملک کی مجموعی بجلی کے 25 فیصد کا حصہ، مشترکہ سائیکل یونٹوں کے بھاپ سیکشن سمیت بجلی، پانی اور جوہری پاور پلانٹس میں کسی اضافی حیاتیاتی ایندھن کے استمعال بغیر پیدوار کی گئی تھی۔

رپورٹ کے مطابق گزشتہ سال کے دوران، 312 ہزار 658 ارب کلو واٹ گھنٹے میں سے 79 ہزار 559 ارب کلو واٹ گھنٹے کی بجلی پیداوار بغیر کسی حیاتیانی ایندھن سے کی گئی ہے جو 4۔25 فیصد کے حصے پر مشتمل ہے۔

اس کے علاوہ 79 ہزار 459 ارب کلو واٹ گھنٹے میں سے 94۔41 ارب کلو واٹ گھنٹے کی بجلی  بھی اضافی ایندھن کے استعمال کے بغیر گیس یونٹوں کو مشترکہ چکر میں تبدیل کرنے سے پیداوار کی گئی ہے اس کا مطلب یہ ہے کہ گزشتہ سال کے دوران قریب 11 ارب مکعب میٹر گیس کی بچت ہوچکی ہے۔

فی الحال مشترکہ سائیکل کو تبدیل کرنے کی گنجائش 7500 میگاواٹ تک پہنچ گئی ہے۔

اس طرح، سالانہ 12 ارب مکعب میٹر گیس کی بچت ہوگی اور ملک کے حرارتی بجلی گھروں کی کارکردگی 42 فیصد سے زیادہ تک پہنچ جائے گی؛ اس سے ہر سال تقریبا 43 ملین ٹن گرین ہاؤس گیسوں کے اخراج کو بھی روکا جاسکے گا۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
1 + 2 =