اختلافات کے حل کے میکنزم کے نفاذ سے متعلق اپنے تمام خطوط کا جلد ہی شائع کروں گا: ظریف

تہران، ارنا- ایرانی وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ وہ بہت جلد جوہری معاہدے میں اختلافات کے حل کے میکنزم (جسے سینپ بیک کہا جاتا ہے) کے نفاذ سے متعلق اپنے تمام لکھے گئے خطوط کا شائع کریں گے۔

ان خیالات کا اظہار "محمد جواد ظریف" نے ہفتے کے روز ایک ٹوئٹر پیغام میں کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ پروپیگنڈہ تنازعہ پر یقین نہ کریں؛ امریکہ اور تین یورپی ممالک (ٹروئیکا) کی جانب سے ایران جوہری معاہدے کیخلاف ورزی کے پیش نظر، ایران نے تنازعات کے حل کے میکنزم کو کم سے کم چھ بار نافذ کیا ہے۔

ظریف نے ایران کیجانب سے 6 بار کیلئے اختلافات کے حل کے مکنیزم کے نفاذ سے متعلق کوششوں پر تبصرہ کیا جو درج ذیل ہیں؛

16 دسمبر 2016ء میں امریکہ کیجانب سے ایران جوہری معاہدے کیخلاف ورزی کی وجہ سے

10 مئی 2018ء میں امریکہ کیجانب سے ایران جوہری معاہدے کیخلاف وزی کی وجہ سے

17 جون 2018 ء میں امریکہ کیجانب سے ایران جوہری معاہدے کیخلاف ورزی کی وجہ سے

6 نومبر 2018ء میں امریکہ اور تین یورپی ملکوں کیجانب سے ایران جوہری معاہدے کیخلاف وزی کی وجہ سے

8 مئی 2019ء میں امریکہ اور تین یورپی ملکوں کیجانب سے ایران جوہری معاہدے کیخلاف وزی کی وجہ سے

2 جولائی 2020ء میں تین یورپی ملکوں کیجانب سے ایران جوہری معاہدے کیخلاف وزی کی وجہ سے

اسلامی جمہوریہ ایران کے وزیر خارجہ نے اپنے ٹوئٹر پیغام میں مزید کہا کہ بہت جلد اس حوالے سے اپنے لکھے گئے خطوط کو شائع کروں گا۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
4 + 12 =