ایران میں مچھلی اور سمندری غذائی مصنوعات کی 3۔1 ملین ٹن پیداوار

تہران، ارنا- ایران کی فیشرز اتھارٹی کے سربراہ نے کہا ہے کہ گزشتہ سال کے دوران مجموعی طور پر مچھلی اور سمندری غذائی مصنوعات کی پیداوار 10 لاکھ 280 ہزار ٹن سے زائد تھیں جن میں سے 41 فیصد کا حصہ مچھلی و غیرہ کی پرورش اور 59 فیصد ماہی گیری کے ذریعے فراہم کیا گیا ہے۔

ان خیالات کا اظہار ایرانی "نبی اللہ خون میرزائی" نے ہفتے کے روز ارنا نمائندے کیساتھ گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ 2018ء میں دنیا میں مچھلی اور سمندری غذائی مصنوعات کی مجموعی پیداوار212 ملین ٹن سے زائد ہوگئی ہے جن میں سے 54 فیصد کا حصہ پرورش اور 46 فیصد کا حصہ ماہی گیری کے ذریعے حاصل کیا گیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ماہی گیری مصنوعات کی پیداوار سے متعلق ایران کو دنیا کی 23 ویں پوزیشن حاصل ہے اس کے علاوہ فیشنگ کے شعبے میں ایران دنیا کی 25 ویں پوزیشن پر کھڑا ہے اور ساتھ ہی مچھلی اور دیگر سمندری موجودات کی پرورش سے متعلق اس نے دنیا کی 18 ویں پوزیشن کو اپنے نام کرلیا ہے۔

خون میرزائی کا کہنا ہے کہ بحیرہ ہند میں فیشنگ سے متعلق بھارت کو پہلی پوزیشن حاصل ہے۔

انہوں نے ملک میں ماہی گیری مصنوعات کی پیداوار میں 40 فیصد کا اضافے پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ ملک میں ان مصنوعات کا استعمال میں قابل قدر اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ سال کے دوران سال کے دوران ایران میں کیکڑے کی پیداوار دوگنی ہوگئی ہے اور 25 ہزارٹن کی پیداوار سے 45 ہزار ٹن کی پیداور تک پہنچ گئی ہے۔

 ملک میں کیکڑے کی پیدوار میں اضافہ کے ساتھ ساتھ اس کی بیرون ملک کی برآمدات میں بھی قابل قدر اضافہ دیکھنے میں آیا ہے۔

اس کے علاوہ  گزشتہ سال کے دوران 9 ہزار ٹن سے زائد خشک دودھ کو بیرون ملک میں برآمد کیا گیا ہے۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
1 + 1 =