سلامتی کونسل کی نشست نے جوہری معاہدے کی غیر مشروط حمایت کا ثابت کیا: ایرانی سفیر

لندن، ارنا – برطانیہ میں تعینات ایرانی سفیر نے کہا ہے کہ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل نے تمام اراکین کے درمیان امریکہ کے بغیر باہمی یکجہتی، ایران جوہری معاہدے کی غیر مشروط حمایت، امریکی پالیسیوں کی مذمت کا ثابت کیا۔

ان خیالات کا اظہار حمید بعیدی نژاد نے گزشتہ روز ٹوئٹر پر اپنے پیج پر لکھی۔

انہوں نے کہا کہ امریکہ اپنے اتحادیوں میں اتنا الگ تھلگ تھا کہ پومپیو جلدی سے میٹنگ سے نکل گیا۔

قابل ذکر ہے کہ ایران جوہری معاہدے کے تحت قرار داد 2231 کے نفاذ سے متعلق سربراہ اقوام متحدہ کی رپورٹ کا جائزہ لینے کیلئے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے اجلاس کا گزشتہ رات آغاز کیا گیا۔

منعقدہ اس اجلاس جو دنیا میں کرونا وائرس کے پھیلاؤ کی وجہ سے آن لائن انعقاد کیا گیا، میں قرارداد نمبر 2231 کے نفاذ کی تازہ ترین صورتحال سے متعلق سربراہ اقوام متحدہ کی رپورٹ کو پڑھ کر سنایا گیا۔

منعقدہ اس اجلاس کے دوران اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے تمام اراکین نے اپنے اپنے نقطہ نظروں کا اظہار کیا۔

ایرانی وزیر خارجہ اقوام متحدہ کے آن لائن اجلاس میں خطاب کرتے ہوئے سلامتی کونسل کیجانب سے اقدامات اٹھانے میں تاخیر کو کثیرالجہتی اور قانونی کی بالادستی کیلئے بہت بڑا دھچکا قرار دیا۔

اس نشست میں امریکی وزیر خارجہ نے دعوی کیا کہ ایران کے اسلحہ پر پابندی کی مدت ختم ہونا بین الاقوامی امن و سلامتی کے لئے خطرہ ہے۔

انہوں نے کہا کہ اس عالمی تنطیم کے سامنے 2 راستے ہیں یا اسے بین الاقوامی امن و سلامتی  جو اس تنظیم کا بنیادی اساس ہے، کے لیے کھڑا ہونا چاہئے یا اقوام متحدہ کے اہم مشن کے خلاف ایران کے اسلحے پر پابندی کو جاری رکھنے کی اجازت دینی چاہئے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
4 + 1 =