بورڈ آف گورنرز کی قرارداد سے ایرانی صورتحال پر اثر نہیں پڑے گا

تہران، ارنا- نائب ایرانی صدر نے عالمی ایٹمی ایجنسی کے بورڈ آف گورنرز میں ایران مخالف قرارداد کی منظوری پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ وہ ایران کی صورتحال پر کوئی سنجیدہ اثر نہیں پڑے گا۔

ان خیالات کا اظہار"اسحاق جہانگیری" نے ہفتے کے روز محکمہ توانائی کے اعلی عہدیداروں سے منعقدہ ایک اجلاس کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے بورڈ آف گورنرز میں ایران مخالف قرارداد کی منظوری کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ یہ ملاقاتیں اور قراردادیں فیصلہ کن کردار ادا نہیں کرتی ہیں اور ہمارا ملک جس نے توانائی، تجارت، نقل و حمل اور بینکاری کے مختلف جہتوں میں پابندیوں کے انتہائی سخت دباؤ کو برداشت کیا ہے، تو اس طرح کی قراردادوں کی پروا نہیں کرتا اور ویسے یہ ایران کی صورتحال پر کوئی سنگین اثرات مرتب نہیں کرے گا۔

جہانگیری نے کہا کہ مغربی ممالک ایرانی قوم اور عوام کیخلاف عدم تحفظ کا مظاہرہ کرنے پر اصرار کرتے ہیں؛ وہ پابندیوں کے نفسیاتی بوجھ کو زندہ رکھنا چاہتے ہیں تاکہ کسی نہ کسی طرح اس ملک کے عوام، سرمایہ کاروں اور پروڈیوسروں کو پریشانی لاحق ہو۔

انہوں نے مزید کہا کہ قدرتی وسائل، معاشی وسائل اور سرکاری اثاثوں کے معاملے میں ایران دنیا کے سب سے امیر ممالک میں سے ایک ہے۔

نائب ایرانی صدر نے کہا کہ ایران ایک ایسا ملک ہے جو مشکل حالات پر قابو پا سکتا ہے اور اسے صرف انتظامیہ، معاشرتی سرمائے اور قومی یکجہتی کی ضروریات کے مناسب استعمال کی ضرورت ہے۔

انہوں نے کہا کہ آج ہمارا ملک خطے میں بجلی اور بجلی گھروں کی تعمیر کے میدان میں تکنیکی اور انجینئرنگ خدمات کی فراہمی میں سرفہرست ہے اور اگر ایرانی کمپنیاں بین الاقوامی ٹینڈر منصوبوں میں حصہ لیں اور ان کی راہ میں رکاوٹیں پیدا نہ کی جائیں تو وہ یقینی طور پر ٹینڈر جیت لیں گی۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
7 + 0 =