عالمی ایٹمی ایجنسی اپنے سوالات کو صہیونی اور امریکی دعوے کی بنیاد پر نہ رکھے: ایرانی ترجمان

تہران، ارنا – ایرانی وزیر خارجہ کے ترجمان نے بین الاقوامی جوہری توانائی ایجنسی کو مشورہ دیا ہے کہ وہ اپنے سوالات کو امریکہ اور صیہونی حکومت کے دعووں کی بنیاد پر نہ رکھے اور ایران کی معتبر دستاویزات اور آئی اے ای اے کے ساتھ اچھے تعاون پر نظر رکھے۔

یہ بات سید عباس موسوی نے آج بروز پیر ایک پریس کانفرنس کے دوران صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہی۔

انہوں نے کہا کہ آرامکو میں ایرانی میزائل کے حملے کے لیے اقوام متحدہ کے سکریٹری جنرل کی ایران مخالف نئی رپورٹ ایران کے خلاف نئی امریکی پالیسی اور منصوبے کے مطابق ہے اور یہ دعوے بے بنیاد اور مذکورہ الزام امریکہ اور سعودی حکومت کے دباؤ میں ہے۔

٭٭کینیڈا نے ایرانی شہریوں کے لیے قونصلر عمل کو درہم برہم کردیا

موسوی نے اپنی کینیڈین ہم منصب کے ساتھ یوکرائنی طیارے کے حادثے پر مذاکرات کا حوالہ دیتے ہوئے بتایا کہ بدقسمتی سے ایرانیوں سے ہمدردی رکھنے کے دعووں کے باوجود  بہت سارے ایرانیوں کے قونصلرانہ عمل میں خلل ڈال دیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ اگر کینڈا چاہے ہم قونصلر سیکشن کھولنے اور ایرانی شہریوں کو خدمات فراہم کرنے پر تیار ہے۔

٭٭ایران کے خلاف شرارت قابل قبول نہیں

موسوی نے کہا کہ اسلامی جمہوریہ کے خلاف افغانستان میں ہونے والی کچھ شرارتوں اور تہران میں تعینات افغان سفیر کو ایرانی محکمہ خارجہ میں طلب کرنے کے بارے میں  کہا کہ ہمسایہ ممالک کے ساتھ ہمارے تعلقات اچھے ہیں اور اسلامی جمہوریہ اپنے ہمسایہ ممالک کے ساتھ تمام شعبوں میں ان تعلقات کو بڑھانا چاہتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ اسلامی جمہوریہ چار دہائیوں سے افغان بھائیوں اور بہنوں کا میزبان ہے اور آج بھی اس کی سلامتی اور استحکام کا خواہاں ہے۔

٭٭امریکہ سے جنوبی کوریا کی اندھی اطاعات قابل قبول نہیں

موسوی نے جنوبی کوریا میں منجمد ہونے والی ایرانی کرنسیوں اور اس مسئلے کے جائزہ کے لیے مرکزی بینک کو ایرانی صدر کے حکم کا حوالہ دیا ہے کہا کہ ہم تقریبا پچاس سالوں سے جنوبی کوریا کے ساتھ رابطے میں ہے اور اب تیسرے ممالک کی مداخلت کی وجہ سے دونوں ممالک کے اچھے تعلقات کمزور ہو رہے ہیں۔

انہوں نے ترکی میں ایرانی گیس کی منتقلی میں دو مہینے کی معطلی کے حوالے سے کہا کہ ترکی میں ایرانی گیس کی برآمدات میں روکنے کی وجہ ترکی سرزمین میں ایک دہشتگردی حملہ ہے اور اس کی وجہ سیاسی یا اقتصادی نہیں ہے اور دوسری فریق کو جلد از جلد ہونے والے نقصان اور دھماکے کی مرمت کرنی ہوگی اور یہ ظریف کے دورہ ترکی میں زیر بحث عنوانات میں سے ایک ہوسکتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہم امید کرتے ہیں کہ جلد از جلد گیس لائن کی مرمت کی جائےگا اور برآمدات کو دوبارہ آغاز کیا جائے گا۔

٭٭ امریکہ نے یورپ کی توانائی کی سیکورٹی کو خطرے میں ڈال دیا ہے

موسوی نے کہا کہ ہم جرمنی کےاس ردعمل، کہ امریکہ نے یورپ کی توانائی کی سیکورٹی کو خطرے میں ڈال دیا ہے، کا خیرمقدم کرتے ہیں،امریکہ نہ صرف توانائی کی سیکورٹی بلکہ دنیا کی سیاسی اور معاشی سلامتی کو خطرے میں ڈال دیا ہے اور بدقسمتی سے عالمی برادری نے امریکہ کے اقدامات کے سامنے خاموشی اختیار کیا ہے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
6 + 4 =