ایرانی پولیمر انڈسٹریز کی برآمدی منڈیوں میں رونقیں بڑھنے لگیں

تہران، ارنا- ایرانی پولیمر انڈسٹریز کی نیشنل ایسوسی ایشن کے سربراہ نے کہا ہے کہ وہ ہمسایہ ممالک جو اس پہلے پولیمر انڈسٹری کی ضروریات کو کسی اور ملک سے پوری کرتے تھے انہوں نے کرونا وائرس کے پھیلاؤ کے بعد ایران کا رخ کرلیا ہے۔

"سعید ترکمان" نے اتوار کے روز گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ کرونا وائرس کے پھیلاؤ نے زندگی کی تمام پہلووں پر مختلف اثرات مرتب کیے ہیں اور اس حوالے سے پولمیر مصنوعات کی پیداوار میں تبدیلی کا باعث بن گیا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ ان تبدیلیوں نے پولیمر انڈسٹری کے مختلف حصوں میں مختلف اثرات چھوڑدیے ہیں؛ ایک طرف نقل و حمل کی شدید پابندیوں کی وجہ سے وہ برآمدی صنعتوں کو بہت نقصان پہنچا اور دوسری طرف وہ ہمسایہ ممالک جو اس پہلے پولیمر انڈسٹری کی ضروریات کو کسی اور ملک سے پوری کرتے تھے انہوں نے کرونا وائرس کے پھیلاؤ کے بعد ایران کا رخ کرلیا ہے۔

ترکمان نے کہا کہ ایران کے اکثر پڑوسی ممالک اسی طرح کے معیار کی ایرانی مصنوعات سے درکار سامان خریدنے کو ترجیح دیتے ہیں؛ تو اس لیے ایرانی پولیمر انڈسٹریز کی مصنوعات کی برآمدات کے فروغ کی راہ میں نئے باب کھل گئے ہیں۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
6 + 2 =