ایران میں ابھی غیر ملکی طلبا کی واپسی کا امکان نہیں ہے

تہران، ارنا- اہل بیت (ع) کی بین الاقوامی یونیورسٹی کے نائب سربراہ نے کہا ہے کہ پاکستان، افغانستان اور بھارت جیسے ملکوں میں کرونا وائرس کے پھیلاؤ کے پیش نظر ابھی اس یونیورسٹی میں زیر تعلیم غیر ملکی طلبا کی ایران واپسی کا امکان نہیں ہے۔

ان خیالات کا اظہار علامہ "سید عابدین بزرگی" نے آج بروز اتوار کو ارنا نمائندے کیساتھ گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے مزید مہا کہ اہل بیت (ع) کی بین الاقوامی یونیورسٹی میں ایم- اے کے 9 مضامین پڑھائے جاتے ہیں اور ہر مضمون میں تقریبا 10 سے 12 تک غیر ملکی طالب علم زیر تعلیم ہیں۔

عابدین بزرگی کا کہنا ہے کہ اہل بیت (ع) یونیورسٹی میں طالب علموں کے دو گروہ زیر تعلیم ہیں؛ پہلے گروہ  دوسرے سمسٹر کے طالب علم ہیں جن کا ورچوئل تعلیم کیا گیا ہے اور وہ 6 جون سے اساتذہ کی ہم آہنگی سے تعلیم میں مشکلات کا حل کرنے کیلئے یورنیورسٹی جا سکتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ دوسرے گروہ چوتھے سمسٹر کے طالب علم ہیں جو وہ تھیسس تیار کر رہے ہیں جو کرونا وائرس کے پھیلاؤ کی وجہ سے اپنے آبائی وطن لوٹ گئے ہیں اور سائبر اسپیس کا استعمال کرتے ہوئے اپنے تھیسس کو آگے بڑھائیں گے۔

عابدین بزرگی نے کہا کہ وہ طالب علم جو اپنے آبائی وطن واپس لوٹ گئے ہیں کی ابھی ایران واپسی کا امکان نہیں ہے۔

انہوں نے کہا کہ چونکہ افغانستان، پاکستان اور بھارت میں کرونا وائرس کے پھیلاؤ میں اضافہ ہوگیا ہے ابھی غیر ملکی طلبا کی ایران واپسی کے شرایط کی فراہمی اور ہاسٹلز کے استعمال کا امکان نہیں ہے۔

انہوں نے کہا کہ وہ طلبا جو ایران میں مقیم ہیں، ان سے صحت کے حفاظتی تدابیر پر عمل پیرا ہونے کیساتھ حضوری امتحان لیا جاتا ہے اور ہم بیرون ملک مقیم طلباء کو بھی عملی طور پر امتحان دینے کیلئے ایک ایسا آن لائن طریقہ تیار کرنے کی کوشش کر رہے ہیں، کیونکہ کچھ ممالک میں طلبا کیلئے سائبر اسپیس اور آن لائن سسٹم استعمال کرنے کیلئے انٹرنیٹ کی فراہمی نہیں ہے۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
3 + 1 =