سرحدی سلامتی کو مضبوط بنانے اور دہشت گردوں سے مقابلہ کرنے کے نئے اقدامات کی ضرورت ہے: ایرانی پولیس چیف

تہران، ارنا - ایرانی پلیس کے سربراہ نے کہا ہے کہ سرحدی سلامتی کو مضبوط بنانے اور دہشت گردوں سے مقابلہ کرنے کیلئے نئے اقدامات کی ضرورت ہے۔

یہ بات بریگیڈیئر جنرل "حسین اشتری" نے اتوار کے روز پولیس فورس کے نئے بارڈر کمانڈر کے اعزاز اور تعارف کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔
اس موقع پر انہوں نے کہا ک سرحدی پولیس کے ترقی یافتہ اقدامات خاص طور پر جنگی تیاریوں کو بہتر بنانا اسلامی جمہوریہ ایران کے سرحدی محافظوں کی ایک اہم ترجیح ہے۔
انہوں نے کہا کہ جدید آپٹیکل اور الیکٹرانک آلات کے استعمال کے ساتھ سمارٹ بارڈر کنٹرول اور ان پٹ ٹرمینلز، بارڈر پٹی کو کنٹرول اور نگرانی کے لئے ڈرون سہولیات کا استعمال، بحری بیڑے کو مضبوط بنانا اور نیوی گیشن ، ڈائیونگ اور میرین رائفلز کے شعبوں میں بحری اہلکاروں کی خصوصی تربیت کی سطح کو بہتر بنانا ، سامان اور منشیات کی اسمگلنگ سے مقابلہ کرنا ایران کی سرحدوں کو مضبوط بنانے کے لئے اٹھائے گئے اقدامات میں سے ایک ہیں۔
جنرل اشتری نے ایران مخالف امریکی نئی پابندیوں کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ ایرانی کمانڈروں پر پابندیاں عائد کرنا ایک سازش ہے جس کی کوئی اثر یا اہمیت نہیں ہے۔
انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ ایرانی پولیس کے کمانڈروں کے خلاف پابندیاں عائد کرنا اس بات کی علامت ہے کہ ہم صحیح راہ پر گامزن ہیں۔
یاد رہے کہ امریکہ نے ایرانی عوام کے خلاف ظالمانہ پابندیوں کے تسلسل میں گزشتہ مہینے کے دوران ایرانی پولیس کے بعض کمانڈروں کو اس فہرست میں شامل کردیا۔
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
2 + 0 =