امام خمینی (رہ) بیسویں صدی کے سب سے بڑے اور با اثر رہنما تھے

لندن، ارنا- پوری دنیا کے متعدد علمائے کرام، سیاسی اور سماجی کارکنوں نے لندن میں منعقدہ ایک آن لائن اجلاس کے دوران، امام خمینی (رہ) کے فکری اور عملی ورثے پر تبادلہ خیال کرتے ہوئے آپ کو بیسویں صدی کے سب سے بڑے اور با اثر رہنما قرار دیا۔

منعقدہ اس اجلاس جو یوٹیوب، فیس بک، اسلامک سنٹر آف انگلینڈ کے ورچوئل نیٹ ورکس سمیت اہل بیت اور ہدایت ٹی وی چینلز اور یونیوز کے فارسی اور عربی ٹی وی چینلز سے بیک وقت لائیو نشر کیا گیا، میں اسلامی جمہوریہ ایران، برطانیہ، آسٹریلیا اور کینیڈا سے تعلق رکھنے والے 11 مسلمان اور عیسائی مفکرین نے دنیا پر امام خمینی (رہ) کے نظریات کے اثرات پر تبادلہ خیال کیا۔

اس موقع پر اسلامک سنٹر آف انگلینڈ کے سربراہ علامہ "سید ہاشم موسوی" نے خطاب کرتے ہوئے امام خمینی (رہ) کے نظریات کے مطالعہ، تحفظ اور اشاعت پر زور دیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ آج کی دنیا میں امام خمینی (رہ) کے خیالات پہلے سے کہیں زیادہ پھیل رہے ہیں۔

 اس کے علاوہ سیاسی تجزیہ کار "رادنی شکسپیر" نے امام خمینی (رہ) کو مہاتما گاندھی، نیلسن منڈیلا اور مارن لوتھر کنگ سے بڑے لیڈر قرار دے دیا۔

انہوں نے کہا کہ بانی اسلامی انقلاب ایک بہت بڑے آدمی ہیں اور رہیں گے۔

در این اثنا حجاز اسلامی کالج کے نائب سربراہ اور اہل سنت کے مذہبی رہنما شیخ  "نورالاقطاب صدیقی" نے کہا کہ امام خمینی (رہ) نے بلند آواز میں سب کو اسلام کی برتری پہنچائی اور یہ ظاہر کیا کہ پوری دنیا میں اسلام کے پیغام کو سنجیدگی سے سنا جاتا ہے۔

سرگرم سماجی کارکن "سیدہ ام فروہ" نے بھی امام خمینی (رہ) کو بیسیویں صدی کے سب سے بڑے اور با اثر رہنما قرار دے کر کہا کہ آپ اخلاقی اور روحانی خصوصیات کے حامل تھے جو انھیں دوسرے عالمی رہنماؤں سے الگ رکھتے تھے۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
7 + 2 =