اقوام متحده کا ایرانی سفارتکاروں کیخلاف عائد پابندیوں پر خدشات کا اظہار

نیویارک، ارنا- اقوام متحدہ کے ترجمان نے امریکہ کیجانب سے اسلامی جمہوریہ ایران اور بعض دیگر ملکوں کے سفارتکاروں کیخلاف ویزہ جاری کرنے اور آمد و رفت سے متعلق پابندیاں عائد کرنے پر اپنے خدشات کا اظہار کر دیا ہے۔

ان خیالات کا اظہار "استفان دوجاریک" نے بدھ کے روز پریس کانفرس کے دوران ارنا نمائندے کے سوال کے جواب میں کیا۔

ارنا نمائندے نے اس اجلاس کے دوران "جمعہ کو میزبان ملک سے تعلقات کمیٹی کا غیر رسمی اجلاس ہوگا۔ ایسا لگتا ہے کہ یہ سفارتکاروں اور ایجنٹوں کیخلاف کچھ پابندیوں سے متعلق ہے۔ کیا اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل میزبان ملک سے رابطے میں ہیں یا اس سیاسی مسئلے کو حل کرنے سے متعلق ان کی کوئی تجویز ہے؟" کا سوال اٹھایا۔

اقوام متحدہ کے ترجمان نے اس سوال کے جواب میں کہا کہ بلاشک؛ در حقیقت، میں اس بات کی تصدیق کرسکتا ہوں کہ میزبان ملک کی کمیٹی عملی طور پر جمعہ کے روز مختلف پابندیوں جیسے سفری پابندیوں پر تبادلہ خیال کرے گی۔

انہوں نے مزید کہا کہ ہم سفارتکاروں کیخلاف عائد سفری اور ویزہ پابندیوں سے متعلق تشویش میں ہیں۔

دوجاریک کا کہنا ہے کہ اقوام متحدہ کے سکریٹری جنرل سمیت ہر سطح کے سینئر عہدیدار، اقوام متحدہ کے معاہدوں کے فریم ورک کے تحت اس سلسلے میں کوئی حل تلاش کرنے کیلئے میزبان ملک کیساتھ مل کر کام کر رہے ہیں۔

یہ بات قابل ذکر ہے کہ امریکی محکمہ خارجہ نے اسلامی جمہوریہ ایران اور بعض دیگر ملکوں کے سفارتکاروں کیخلاف نیویارک شہر میں آمد و رفت سے متعلق نئی پابندیاں عائد کیں ہیں اور وہ بلا اجازت اپنے دفتر سے 5 میل سے دور نہیں ہوسکتے ہیں۔

اس کے علاوہ وہ خصوصی ویزہ ضوابط نافذ کرکے اقوام متحدہ کے اجلاسوں میں ایرانی عہدیداروں یا وفود کی موجودگی کو بھی روکتے ہیں۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
1 + 13 =