امریکہ پر بین الاقوامی عدالتوں میں مقدمہ چلنا ضروری ہے: علامہ رئیسی

شہر ری، ارنا – ایرانی عدلیہ کے سربراہ نے کہا ہے کہ امریکہ پر نہ ہی انسانی حقوق کے دعویدار بلکہ انسانی بنیادی حقوق کی خلاف ورزی کے الزام میں بین الاقوامی عدالتوں میں مقدمہ چلنے کی ضرورت ہے۔

یہ بات علامہ "سید ابراہیم رئیسی" نے منگل کے روز بانی انقلاب امام خمینی کے مزار میں خطاب کرتے ہوئے کہی۔
اس موقع پر انہوں نے امریکہ میں حالیہ مظاہروں کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ آپ مغرب اور امریکہ کے حالات دیکھ رہے ہیں کہ محروم افراد کیا کرتے ہیں، ایک سیاہ فام شہری کے ساتھ امریکی پولیس کا رویہ غیرمنظم امریکہ کی علامت ہے۔
علامہ رئیسی نے کہا کہ امریکہ کرونا وائرس سے متاثرہ افراد سے کس طرح سلوک کرتا ہے، امریکہ میں بنیادی انسانی حقوق تباہ کردیئے جاتے ہیں اور انسانی حقوق کے دعویدار چیخ نہیں مارتے ہیں، آج امریکہ پر نہ ہی انسانی حقوق کے دعویدار بلکہ انسانی بنیادی حقوق کی خلاف ورزی کے الزام میں بین الاقوامی عدالتوں میں مقدمہ چلنے کی ضرورت ہے، یہ صرف رنگ کی بات نہیں ، امریکہ میں منظم نسل پرستی کا معاملہ ہے۔
امریکی پولیس اہلکار کی طرف سے ایک سیاہ فام امریکی شہری کی موت کے بعد جس نے گلا گھونٹ کر اسے گلا میں پاؤں رکھ کر ہلاک کیا۔ امریکہ کے مختلف شہروں میں نسل پرستانہ پالیسیوں اور رنگ برنگے لوگوں کے حقوق کی پامالیوں کے خلاف مظاہرے ہو رہے ہیں۔
امریکی پولیس نے اس ریلیوں پر حملہ کرکے مار پیٹ کے بعد سیکڑوں مظاہرین کو گرفتار کرکے جیل بھیج دیا ہے۔
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
3 + 13 =