ایرانی صوبے اصفہان میں "امام" چوک کو عالمی ثقافتی ورثہ کی حیثیت سے رجسٹرڈ کیا گیا

اصفہان، ارنا – ایرانی صوبے اصفہان میں نقش جہان (امام) نامی اسکوائر دنیا کے عالمی ثقافتی ورثہ کی فہرست میں شامل کیا گیا جس کا مقصد اس کے زیادہ سے زیادہ استعمال کے لئے اضافی سرمایہ کاری کو راغب کرنا ہے۔

یہ بات اصفہان بین الاقوامی سائنسی تعاون آفس کے ڈائریکٹر "سید کمیل طیبی" نے ارنا نیوز ایجنسی کے ساتھ گفتگو کرتے ہو‏ئے کہی۔
انہوں نے کہا کہ اصفہان کے امام اسکوائر اپنے منفرد ورثہ ، تاریخی ، معاشی اور شہری خصوصیات کی مبنی پر یورپی یونین کے زیر اہتمام ایک تحقیقی منصوبے کے فریم ورک کے تحت بین الاقوامی تنظیموں کے لئے بین الاقوامی ثقافتی ورثہ کے طور پر منتخب اور پیش کیا گیا تھا۔
طیبی نے کہا کہ افق 2020 یوروپی یونین کی تاریخ کا سب سے بڑا تحقیقی اور اختراع پروگرام ہے جس میں نجی سرمایہ کاری کے علاوہ سات سال (2014 سے 2020 تک) کے لئے ڈیزائن کیا گیا تقریبا 80 بلین یورو ہے۔
افق 2020 پروگرام سائنسی لیبارٹریوں سے مارکیٹ میں نظریات کو فروغ دے کر جدید ٹیکنالوجیز ، دریافتوں اور امید افزا ترقیوں کی تعداد میں اضافہ کرنے کے لئے ڈیزائن کیا گیا ہے۔
نقشہ جہاں اسکوائر دنیا کے تیسرے سب سے بڑا چوک ہے ، جو ایرانی شہر اصفہان کے مرکز میں واقع ہے جس کو فارسی شاہ عباس اول کے حکم سے 1598 اور 1629 کے درمیان تعمیر کیا گیا تھا۔ 1979 میں ، اسے یونیسکو کے عالمی ثقافتی ورثہ میں شامل کردیا گیا۔
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
1 + 17 =