امریکی حالیہ اقدام قرارداد 2231 کو تازہ ترین دھچکا ہے: ایران

نیویارک، ارنا – اقوام متحدہ میں تعینات ایرانی مستقل مندوب نے جوہری چھوٹ کے خاتمے کے لئے امریکی فیصلے کو قرارداد 2231 کو آخری دھچکا اور جوہری معاہدے میں واشنگٹن کی شراکت داری کے دعوے کو غلطی قرار دیا ہے۔

یہ بات "مجید تخت روانچی" نے جمعرات کے روز اپنے ٹوئٹر پیج میں کہی۔
اس موقع پر انہوں نے کہا کہ گزشتہ دو سال سے پہلے ٹرمپ جوہری معاہدے سے علیحدہ ہوگیا اور اب اس معاہدے اور سلامتی کونسل کی قرارداد 2231 کی خلاف ورزی کے تسلسل میں پمپیو نے قرار داد کی شقوں کے نفاذ پر جرمانہ عائد کرکے آخری دھچکا لگایا۔
تخت روانچی نے کہا کہ جوہری معاہدے میں امریکی شراکت داری کا دعوی نہ صرف مضحکہ خیز بلکہ غلطی ہے۔
تفصیلات کے مطابق، امریکی وزیر خارجہ مائک پمپیو نے اپنے ٹوئٹر پیج میں کہا کہ آج ہم ایران میں جوہری معاہدے سے متعلق منصوبوں کے لئے عائد پابندیوں سے چھوٹ کو ختم کردیں گے ، جو 60 دن میں نافذ ہوجائے گی اور ایران کی جوہری سرگرمیوں میں مسلسل اضافہ کا تقاضا ہے کہ یہ تعاون ختم ہوجائے۔
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
7 + 3 =