عالمی تنظیمیں صہیونی مظالم کے سامنے خاموش بیٹھی ہیں: ایرانی سفیر

بیجنگ، ارنا- جاپان میں تعینات ایرانی سفیر نے کہا ہے کہ سات دہایئوں کے دوران، فلسطینی عوام کو اسلحے کی طاقت، جسمانی دہمکی، قتل اور لوٹ مار کے ذریعے اپنی وطن سے بے دخل کردیے گئے ہیں اور بین الاقوامی تنظیموں نے صہیونی ریاست کے مظالم کے سامنے خاموشی اختیار کی ہے۔

ان خیالات کا اظہار "مرتضی رحمانی موحد" نے ہفتے کے روز "قدس اور فلسطین پر انسان دوستانہ نظر" کے عنوان کے تحت منعقدہ وبینار کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

منعقدہ اس وبنیار میں ایران اور جاپان کے 70 اہم شخصیات سمیت جاپان میں تعینات فلسطینی سفیر نے حصہ لیا تھا۔

 اس موقع پر رحمانی نے کہا کہ اقوام متحدہ کا کنونشن برائے پناہ گزینوں کے امور جسے فلسطینی پناہ گزینوں کی صورتحال کا جائزہ لینے کا کام سونپا گیا ہے، نے بھی اپنی ذمہ داری کو پورا نہیں کیا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ اب فلسطین پر ناجائز صہیونی ریاست کے قبضیے کی 72 ویں سالگرہ ہے۔

 ایرانی سفیر نے کہا کہ ان تمام سالوں کے دوران، ناجائز صہیونی ریاست نے فلسطین کے مظلوم باشندوں پر بے دردی سے حملہ کرتے ہوئے تمام قسم کے غیر انسانی جرائم کا ارتکاب کیا ہے جس کی تمام انسانی رسوم اور مذاہب میں مذمت کی جاتی ہے اور انسانی حقوق کے عصری قوانین و ضوابط کی خلاف ورزی بھی ہے۔

رحمانی نے کہا کہ ناجائز صہیونی ریاست نے حاکم اور رجعت پسند حکومتوں کی براہ راست حمایت سے مظلوموں پر ظلم کیا اور ان کو اپنے آبائی گھروں اور آباؤ اجداد سے بے دخل کردیا۔

 ایرانی سفیر نےمزید کہا کہ ان تمام سالوں کے دوران، مغربی ایشیا کے علاقے میں سکون اور سلامتی نظر نہیں آر رہا۔

 انہوں نے کہا کہ صہیونی غاصبوں کے ہاتھوں صبرا، شتیلا، کفر قاسم وغیرہ کے کیمپوں میں فلسطینیوں نسل کشی اور قتل عام کو تاریخ میں ریکارڈ کیا گیا ہے۔

رحمانی نے کہا کہ تاریخ کبھی فراموش نہیں کرے گی کہ عالمی برادری اور انسانی حقوق کے محافظوں نے ہزاروں بے گناہ فلسطینیوں کے قتل عام کے سامنے خاموشی اختیار کی اور اب امریکی حکومت نے فلسطینی عوام کے خلاف ہوکر انسانی حقوق کی خلاف ورزی کرتے ہوئے اپنا سیاہ کارنامے کو مزید کالا کردیا ہے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
3 + 2 =