فلسطین کے دفاع میں ایرانی قوم کی مزاحمت تاریخ میں باقی رہےگی

اسلام آباد، ارنا - پاکستان کے صوبائی دارالحکومت لاہور میں تعینات ایران کے قونصل جنرل نے اس خطے میں کچھ عربوں کے تباہ کن کردار اور امریکی- صہیونی صدی کے معاہدے سے ان کی پشت پناہی کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ فلسطین کے دفاع کے لئے ایرانی قوم کی مزاحمت تاریخ میں باقی رہے گی۔

یہ بات محمد رضا ناظری نے عالمی یوم القدس کی مناسبت سے لکھے گئے ایک پیغام میں کہی۔

انہوں نے کہا کہ رمضان المبارک کے آخری جمعے کو یوم القدس کہا جاتا ہے۔ اسلامی جمہوریہ ایران کے عظیم بانی ، امام خمینی نے اس دن کو القدس کے عالمی دن کا نام رکھا ہے۔

ناظری نے مزید بتایا کہ اسرائیل کی ریاست کی تشکیل جھوٹے بہانہ اور ایک عظیم سیاسی جھوٹ کی بنیاد پر ہے ،عالمی صیہونی تحریک کے بانی اور کتاب یہودی ریاست کے مصنف' تھیوڈور ہرزل' نے اپنی کتاب میں لکھا ہے کہ دنیا میں خاص طور پر یورپ میں بسنے والے یہودیوں پر ظلم کیا جاتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہوسکتا ہے کہ صیہونیوں کے خلاف بہت ساری کہانیاں اور واقعات، صہیونیوں کی مظلومیت کو ظاہر کرنے اور اس اصل مقصد (یہودی ریاست کا قیام) کے حصول کے لئے خود اسرائیل کے ذریعے بنائی گئی ہیں۔

ناظری نے بتایا کہ آج، فلسطین کی حمایت صرف مسلمانوں تک ہی محدود نہیں ہے، بلکہ تمام مذاہب کے پیروکار حتی کہ کچھ صیہونی یہودی گروپوں بھی بیت المقدس کا عالمی یوم منا رہے ہیں اور  غاصب صیہونی حکومت کی انسانیت دشمن پالیسیوں کی مخالفت میں ریلیوں میں حصہ لے رہے ہیں۔

لاہور میں ایرانی قونصل جنرل نے مزید کہا کہ فلسطین کے دفاع میں اسلامی جمہوریہ ایران کی پوزیشن واضح ہے لیکن اسرائیل کے مظالم اور اس ریاست سے ٹرمپ انتظامیہ کی یکطرفہ حمایت اور اس کے غیر قانونی اقدامات جیسے سفارت خانہ کو بیت المقدس میں منتقل کرنا اور صدی معاہدے کے منصوبے کی وجہ سے بہت امن پسند ممالک اور حتی کہ یورپ میں اسرائیل کے حامی ممالک نے بھی امریکی پالیسیوں کے ساتھ مخالفت کر کے سلامتی کونسل میں امریکہ اور اسرائیل کے موقف پر سخت تنقید کی ہے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@


 

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
9 + 0 =