ناجائز صہیونی ریاست انسانوں کے اجتماعی قتل کی مشین ہے: ایران

تہران، ارنا-  ایرانی محکمہ خارجہ نے عالمی یوم القدس کے موقع پر ناجائز صہیونی ریاست کی نسل کشی اور جنگی جرائم پر روشنی ڈالی۔

تفصیلات کے مطابق ایرانی محکمہ خارجہ نے عالمی یوم القدس کے موقع پر انگریزی زبان میں جاری ٹوئٹر پیغامات میں ناجائز صہیونی ریاست کے جارحانہ اقدامات اور مظالم پر روشنی ڈالی جو شرح ذیل ہیں؛

1- ناجائز صہیونی ریاست انسانوں کے اجتماعی قتل کی مشین ہے جو بغیر کسی قوانین اور ضوابط کے فلسطینی عوام کا قتل کر دیتی ہے؛ 20 سالہ رزان النجار غزہ کا ایک رضاکار امدادی کارکن تھا جسے 2018 میں گولی مار کر ہلاک کردیا گیا تھا۔ صہیونی ریاست  کی بے رحم فوجیوں نے جان بوجھ کر اسے نشانہ بنایا۔

2- ناجائز صہیونی ریاست کو نہتے معصوم بچوں کے قتل میں بڑا ہاتھ ہے؛ شہید کیے گئے تمام بچے غیر مسلح تھے اور وہ محض آزادی اور انصاف کے خواہاں تھے ، لیکن اسرائیلی فوج نے بغیر کسی قواعد کے ان پر فائرنگ کردی؛ یہ کسی جنگی جرم کی گھناؤنی مثال ہے۔

3- گرفتار کیے گئے فلسطینی خواتین اور بچے ناجائز صیہونی ریاست کے مظالم کا اصل شکار ہیں۔ انہیں وقتا فوقتا شدید مارا پیٹا جاتا ہے اور تشدد کا نشانہ بنایا جاتا ہے جبکہ ناجائز صہیونی ریاست کی حراستی سہولیات میں بغیر کسی جواز کے رکھے جاتے ہیں انہیں فوری طور پر رہا کیا جانا چاہئے۔

4- منظم تشدد ناجائز صہیونی ریاست کے ڈی این اے کا ایک حصہ ہے؛ وہ ایک متشدد صہیونی ریاست ہے جس کے تحت معصوم فلسطینیوں کو قتل کرنے کی روایتی پالیسی ہے۔ صہیونی ریاست کا منظم تشدد تمام انسانی حقوق سے متصادم ہے؛ یہ ایک وحشیانہ فعل ہے۔

5- قبضہ ناجائز صہیونی ریاست کی بنیاد ہے؛ تاہم فلسطینیوں کی نوجوان نسل اتنی بہادر ہے کہ وہ اب مزید قبضے کو برداشت نہیں کرے گی؛ عہد تمیمی 19 سالہ سماجی کارکن ہیں جو قومی سرزمین آزادی تحریک کے نمونے ہیں۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
7 + 10 =